شام سے امریکی انخلاء غیرمعمولی بات نہیں: ایرانی سپہ سالار

تہران، 30 دسمبر، ارنا - ایرانی مسلح افواج کے سربراہ نے کہا ہے کہ خطے میں امریکہ کی بڑی سطح پر موجودگی کو دیکھتے ہوئے اس کا شام سے انخلاء کوئی بڑی بات نہیں ہے.

میجر جنرل "محمد باقری" نے کہا کہ شام ، دشمنوں کی جانب سے مشرق وسطی میں بدامنی پھیلانے کی کوششوں کی علامت ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ علاقے کے دشمن داعش اور تکفیری دہشتگرد گروہ قائم کرنے کے ساتھ شام کی قانونی حکمرانی کی تباہی چاہتے ہیں.
جنرل باقری نے کہا کہ دشمنوں نے دہشتگردوں کی حمایت اور شام میں ان کے محاصرے کے وقت بھی، اپنے ہیلی کاپٹروں کے ساتھ ان کو بھاگنے کا موقعہ فراہم کیا.
ایرانی سپہ سالار نے کہا کہ انہوں نے شامی حکومت اور عوام کی اجازت کے بغیر اس ملک کے بعض حصوں کو قبضہ جما لے کر بیس قائم کردیا.
انہوں نے امریکی حکام کی جانب سے شام کی تقسیم اور ان کے عوام پر بمباری کی دھمکیوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ انہوں نے شام کو نشانہ بنانے کے لئے صہیونیوں اور دہشتگردوں کی حمایت کے لئے بعض علاقائی اور عرب ممالک کا استعمال کیا.
ایرانی مسلح افواج کے سربراہ نے کہا کہ امریکہ نے اسلامی جمہوریہ ایران اور شام کے درمیان دوستانہ تعلقات اور شامی حکومت کی جانب سے ناجائز صہیونی ریاست کے خلاف مزاحمت کی وجہ سے اس قانونی حکومت کی شکست کے لئے کسی بھی کاروائی سے دریغ نہیں کیا مگر اب ذلت کے ساتھ اس ملک سے باہر نکل کر رہا ہے.
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@