خواب سے تعبیر تک؛ دس سالہ "امیر محمد" ایران کا جونئیر"ڈیبالا"

تہران، 30 دسمبر، ارنا۔ عالمی شہرت یافتہ ارجنٹائن کے فٹبالرز"پائولو ڈیبالا" کا ایرانی پرستار بچے کی بڑی مہارت سے فٹ بال کھیلنے کی ویڈئو نے سوشل میڈیا پر دھوم مچا دی جس کے بعد اس کی کہانی ہزاروں میلوں کے فاصلے پر ڈیبالا تک پہنچ گئی۔

ایران کے جنوب مغربی صوبے "کھکیلویہ اور بویر احمد" کے چھوٹے شہر "دہدشت" سے تعلق رکھنے والے دس سالہ بچہ "امیر محمد علامہ" کی کہانی اس وقت شروع ہوا جب وہ اپنے شہر کی گلی کوچوں میں پلاسٹیک کی گیند سے فٹ بال کھیلتا رہتا تھا اور ادھر ٹلی ویژن میں اٹلی کے معروف کلب "یوونتوس" کے فٹبالرز ڈیبالا کو دیکھ کر اس کا مداح بن گیا۔
اس کے بعد امیر محمد نے فیصلہ کیا کہ جس طرح ڈیبالا فٹ بال کھیلتا رہتا ہے وہ بھی اس کی طرح فٹ بال کھیلنے کا آغاز کرے۔
امیرمحمد کو فٹ بال کھیلنے اور گیند کے ساتھ شو میں غیرمعمولی مہارت حاصل ہے۔ بایئں پاؤں سے لگائی گئی شوٹ کو بہت زیادہ فاصلے پر واقع چھوٹی سی کھڑکی میں گول کرنا اس کی مہارتوں میں سے ایک ہے، وہ مہارت جس کی ویڈئو نے انٹرنیٹ پر خاصی شہرت حاصل کی اور بالآخر ڈیبالا تک بھی پہنچ گئی۔
ڈیبالا نے فٹ بال کے راستے میں دہدشت سے تعلق رکھنے والے بچے کی حوصلہ افزائی کیلئے اس کو اپنی دستخط شدہ جرسی کا تحفہ دیا۔
دنیا کا ایک مشہور سوشل نیٹ ورک جو فٹ بال کی خاص اور پر کشش ویڈئوز کو وائرل کر رہا ہے پائولو ڈیبالا کی یوونتوس ٹیم کی نمبر 10 جرسی پہن کر فٹ بال کھیلنے والے ایرانی بچے کی ویڈئو کو شایع کی جس میں اس نے نیلی رنگ پلاسٹیک کی گیںد کو شوٹ کر کے بہت زیادہ فاصلے پر واقع چھوٹی سی کھڑکی میں گول کر دیا ہے۔
امیر محمد یقینا ایران کے کونے کونے میں ٹیلنٹ بچوں کی ہزاروں تعداد میں سے ایک ہے جس کا فٹبال ٹیلنٹ اتفاقی طور دریافت کیا گیا اور سوشل میڈیا کی مدد سے شہرت حاصل کی۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@