سعودی حکمران یمنی جنگ کی دلدل میں پھنس چکے ہیں: پاکستانی کالمسٹ

اسلام آباد، 28 دسمبر، ارنا - سنیئر پاکستانی کالم نگار نے کہا ہے کہ اگر ہم یمن کے حالات کی تہہ میں جھانکیں تو ہمیں پتہ چلتا ہے کہ درحقیقت یمن عوام بالخصوص حوثی نہیں بلکہ خود سعودی حکمران اس دلدل میں پھنس چکے ہیں.

''محمد اسلم خان'' نے جمعہ کے روز اردو اخبار ''نوائے وقت'' میں شائع ہونے والے اپنے مضمون 'جنگ یمن: نگاہ منتظر، پردہ وا ہونے کو ہے' میں مزید کہا کہ سعودی قیادت میں اتحادیوں کے امریکی معاونت سے گرائے جانے والے بم یمن میں گھر، ہسپتال، فیکٹریاں اور پل تباہ کررہے ہیں، جس سے زندگی مجموعی طورپر دشوار گزار ہوتی چلی جارہی ہے، فیکٹریوں پر بمباری سے بیروزگاری میں اضافہ ہوا ہے اور اجتماعی طورپر اہل یمن غربت اور پسماندگی کی کھائی میں گرتے چلے جارہے ہیں. مضمون کے مطابق، یمن مقتل بنا ہوا ہے. امت مسلمہ تو بے حسی کے تمام ریکارڈ توڑ چکی ہے، مہذب دنیاکہلانے والے بھی آنکھیں بند کئے ہوئے اس گدھ کی مانند دکھائی دیتے ہیں جن کیلئے کسی کی موت ان کیلئے زندگی کا پیام ہوتی ہے. یمن عرب دنیا کا غریب ترین ملک ہے جوسات سال سے جاری جنگ ، طاقتور برادرعرب ممالک کے محاصرے، مسلسل گولہ باری کا شکار ہے مسلسل ناکہ بندی، خوراک کی عدم ترسیل جیسے مسائل سے عوام ڈھانچوں میں تبدیل ہوچکے ہیں. امریکی کبھی کسی کے دوست نہیں، وہ اپنے مفاد کیلئے کسی سے جپھی ڈالتے ہیں یا پھر بندوق اٹھاتے ہیں. یمن کو نشانہ بنانے کی وجہ محض انتقال اقتدار تک محدود نہیں ہوسکتی، یہ محض اپنے جاہ وجلال کو چیلنج کرنیوالے گستاخوں کی بیخ کنی بھی نہیں ہوسکتی. تازہ ذمہ داری وزیراعظم پاکستان عمران خان نے اٹھائی تھی لیکن شاید اس معاملے کیلئے مزید اقدامات ان کی قوت و استعداد سے باہر ہیں. 274** ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@