شام میں ایران کی موجودگی دوطرفہ مفاہمت کی بنیاد پر ہے: روس

ماسکو، 28 دسمبر، ارنا - روس نے کہا ہے کہ شام میں ایران کے عسکری مشیروں کی موجودگی کا تعلق تہران اور دمشق کے درمیان طے پانے والی مفاہمت سے ہے.

دفترخارجہ کی ترجمان ''ماریا زاخارووا'' نے اپنی ہفتہ وار پریس بریفنگ کے دوران ارنا نیوز کے نمائندے کے سوال کے جواب پر کہا کہ شام میں ایران کی موجودگی تہران اور دمشق کا ذاتی مسئلہ ہے.
انہوں نے شام میں ایران کی موجودگی کے خلاف صہیونی وزیراعظم کے حالیہ دعوے کے ردعمل میں کہا کہ شام ایرانی اہلکاروں کی میزبانی کررہا ہے لہذا غیرملکی مشیروں کی موجودگی کے حوالے سے کوئی بھی فیصلہ میزبان ملک کرے گا.
خاتون روسی ترجمان نے کہا کہ ایران کی شام میں موجودگی کا مقصد دہشتگردوں کے خلاف جنگ میں مشورہ دینا ہے لہذا بحیثیت خودمختار ملک دمشق حکومت کو غیرملکی عسکری مشیروں سے متعلق فیصلہ کرنے کا اختیار ہے.
یاد رہے کہ صہیونی وزیراعظم جس کی پالیسی شام کے اندرونی معاملات میں مداخلت اور شام کے خلاف دہشتگردوں کی حمایت کرنے پر مبنی ہے، شام سے ایرانی اہلکاروں کے انخلاء کا بار بار مطالبہ کرتا آرہا ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@