افغانستان میں قیام امن و سلامتی ایران کی پہلی ترجیح ہے: ایڈمیرل شمخانی

تہران، 27 دسمبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کی اعلی قومی سلامتی کونسل کے سربراہ نے کہا ہے کہ افغانستان میں حکومتی اقدامات کے ذریعے امن و سلامتی کا قیام ایران کی پہلی ترجیح ہے.

ایڈمیرل ''علی شمخانی'' نے افغانستان کے سرکاری دورے کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان میں ہماری کوششوں کا مقصد امن و سلامتی کا قیام ہے جس میں کابل حکومت کو مرکزی کردار حاصل ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ میں صدارتی انتخابات کے دوران ڈونلڈ ٹرمپ کے بیانات اور سابق امریکی صدور کے مطابق طالبان اور داعش کی تشکیل میں امریکہ ملوث ہے.
اعلی قومی سلامتی کونسل کے سیکریٹری نے کہا کہ حتی کہ خطے کی ایک مرحوم رہنما محترمہ بھٹو نے بھی اپنے ایک بیان میں طالبان کی تشکیل میں بعض علاقائی ممالک کے ملوث ہونے کا ذکر کیا تھا.
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ان عناصر کے خلاف جو اسلامی معاشرے کے برعکس قدم اٹھارہے ہیں، صحیح معنوں میں مقابلہ کرنا ہوگا تاہم دوسرے لوگ جو ہتھیار پھینک کر افغان قوم کے ساتھ رہنا چاہتے ہیں ان کے ساتھ مذاکرات کرنے چاہئیں.
ایڈمیرل علی شمخانی نے مزید بتایا کہ ایران نے یہ طریقہ اپنایا ہے اور آئندہ ہفتوں میں اس سے متعلق مزید تفصیلات سامنے آئیں گی اور اس کا مقصد افغان حکومت کی مدد کرنا ہے.
انہوں نے کہا کہ دہشتگردوں کی تخلیق میں ملوث عناصر جو پہلے سے ہی ایرانی کردار کی مخالفت کرتے چلے آرہے ہیں، نے آج پہلے سے ہی شکست سے دوچار ہونے والی داعش تنظیم کو منظم انداز میں افغانستان منتقل کررہے ہیں.
علی شمخانی نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ جس طرح اسلامی جمہوریہ ایران عملی اقدامات کے ذریعے سے ثابت کیا ہے کہ دہشتگردی کے خلاف ہے اور اس راہ میں شہید دئے، امن کے میدان میں بھی اہم کردار ادا کرے گا جس میں خطے اور افغان عوام کا فائدہ ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@