صدر روحانی کا ایران آذربائیجان تعلقات میں پیشرفت پر اطمینان کا اظہار

تہران، 25 دسمبر- صدر مملکت اسلامی جمہوریہ ایران نے جمہوریہ آذربائیجان کے ساتھ دوطرفہ تعلقات کی توسیع کو اہم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ حالیہ برسوں میں مشترکہ روابط میں ہونے والی پیشرفت قابل اطمینان ہے.

یہ بات 'حسن روحانی' نے آج بروز منگل تہران میں آذری اسپیکر 'اوکتای اسداف' کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے ایران اور آذربائیجان کے مابین دوستانہ تعلقات کا حوالہ دیتے ہوئے دونوں ممالک کے درمیان کثیر الجہتی تعلقات کے فروغ اور مشترکہ معاہدوں کے جلد نفاذ پر زور دیا.
انہوں نے اس ملک کے ساتھ باہمی تعلقات کی اہمیت کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ سالوں میں دونوں ممالک کے درمیان تعلقات بڑھا رہا ہے.
روحانی نے حالیہ پانچ سالوں کے دوران ایران اور آذربائیجان کے حکام کے درمیان 12 مرتبہ ملاقاتوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان قریبی اور گہرے تعلقات، اس سفارتی تعلقات کا نتیجہ ہیں.
صدر روحانی نے دونوں ممالک کے درمیان ثقافتی، زبانی، مذہبی مشترکات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس ملک کی خودمختاری کے زمانے کے بعد سے ایران اور آذربائیجان کے درمیان اچھا تعلقات قائم ہوا ہے.
ایرانی صدر مملکت نے صنعت، فارمیسی، اور سائنس اور ٹیکنالوجی سمیت مختلف شعبوں میں باہمی تعاون کے فروغ کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ایران اور آذربائیجان نے بحیرہ کیسپین کے توانائی وسائل کے استعمال کیلئے ایک معاہدہ پر دستخط کیا جو امید ہے کہ حکام کی بھرپور جد و جہد سے اس معاہدے کے نفاذ کو تیز کرنے میں مدد ملے گی کیونکہ یہ دونوں ممالک کے مفاد میں ہے.
ڈاکٹر روحانی نے شمال- جنوب کوریڈور کی تعمیر، آستارا- آستارا اور رشت- آستارا کی ریلوے لائنوں کی توسیع کے لیے باہمی تعاون، دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کے فروغ میں ایک اہم قدم ہے.
انہوں نے مزید بتایا کہ شمال- جنوب کوریڈور کا مکمل نفاذ، بحیرہ عمان اور اینڈین اوشن کو آذربائیجان، روس، سیاہ سمندر، مشرقی اور شمالی یورپ میں کر سکتا ہے.
انہوں نے بحیرہ کیسپین کے ممالک کے لیے بحیرہ کیسپین کے قانونی کنونشن کی اہمیت کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ہم اس بات پر یقین ہیں کہ علاقائی مسائل کو سیاسی طریقے سے حل ہونا چاہیے.
انہوں نے مزید بتایا کہ اسلامی جمہوریہ ایران علاقائی تنازعات کے حل کے لیے کسی بھی مدد کے لئے آمادہ ہے.
اس موقع میں اوکتای اسداف نے ایران اور آذربائیجان کے درمیان اقتصادی سمیت تمام شعبوں میں تعلقات کی توسیع پر زور دیا.
انہوں نے مزید کہا کہ روان سال میں ایران آذربائیجان کے درمیان تجارت کا حجم 40 فیصد اضافہ ہوا ہے.
ترکی اسپیکر نے خطی ممالک کی سالمیت کے دفاع اور علاقائی اور بین الاقوامی مسائل پر ایران کے مثبت موقف کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ یقینی طور پر ہم خطے کے مسائل کو صرف علاقائی ممالک حل کر سکتے ہیں.
9410*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@