امریکہ ایران کے طاقتور نظام کو جھکانا چاہتا ہے: صدر روحانی

تہران، 25 دسمبر، ارنا - ایرانی صدر نے کہا ہے کہ امریکی حکمران خطے میں ایران کو اپنے لئے بڑی رکاوٹ سمجھتے ہیں اسی لئے وہ اسلامی جمہوریہ ایران میں طاقتور نظام کو کمزور اور جھکانا چاہتے ہیں.

ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر ''حسن روحانی'' نے منگل کے روز تہران میں پارلیمنٹ میں نئے سال کے بجٹ پیش کرنے کے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کیا.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ جب بھی ایرانی قوم اور نظام کوئی بڑا قدم اٹھائے تو امریکہ ہمارا مقابلہ کرنے کے لئے میدان میں کود پڑتا ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ نئے سال کے بجٹ کو ایسے وقت میں پارلیمنٹ کو پیش کررہے ہیں جب کئی ماہ سے ایران کو امریکی دباو اور اس کی ظالمانہ پابندیوں کا سامنا ہے.
ایرانی صدر نے کہا کہ امریکی سازشوں کا اصل مقصد اسلامی جمہوریہ ایران کے طاقتور نظام کو جھکانا ہے. امریکی پابندیوں نے نہ صرف براہ راست ایرانی قوم کو نشانہ بنایا ہے بلکہ اس سے علاقائی اقوام اور عالمی کمپنیاں بھی متاثر ہورہی ہیں اور یہ تمام سلسلہ عالمی قوانین کی خلاف ورزی بھی ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ رواں برس دو مسئلے پر کام کررہا تھا ایک یہ کہ ایرانی قوم کو ملکی نظام اور مستقبل سے مایوس کرنا اور دوسرا یہ کہ ملکی مسائل کو حل کرنے میں حکومت کو بے بس دیکھانا.
ڈاکٹر روحانی نے کہا کہ یقینا امریکی اپنے عزائم میں کامیاب نہیں ہوگا اور غیرملکی دباو کے باوجود ایرانی قوم مزید طاقتور اور ذہین ہے اور ہم ایسی تمام سازشوں کے سامنے ڈٹ کر مقابلہ کریں گے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@