خلیج فارس میں امریکی نقل و حرکت پر ہماری کڑی نظر ہے: ایرانی کمانڈر

تہران، 25 دسمبر، ارنا - ایرانی آرمی کے ڈپٹی کوآرڈینٹر نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے خلیج فارس کے پانیوں میں موجود امریکی بحری بیڑوں پر پل پل کڑی نظر رکھی ہوئے ہے.

ایڈمیرل ''حبیب اللہ سیاری'' نے ارنا نیوز ایجنسی سے گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ بحیرہ ہند کے شمالی پانیوں سے کوئی بھی جہاز اس خطے میں داخل ہوا تو ہم اس کی تمام نقل و حرکت پر کڑی نظر رکھیں گے.
یاد رہے کہ مغربی میڈیا نے بتایا تھا کہ ایران جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی کے بعد یو ایس ایس جان سی سٹینس امریکہ کا پہلا بیڑا ہوگا جو جمعہ کے روز تک خلیج فارس میں داخل ہوگا.
ایڈمیرل سیاری نے اس کے ردعمل میں کہا کہ ہمارا سمندری خطہ لاوارث نہیں، یہاں ہر چیز کا حساب کتاب ہوتا ہے اور اس طرح نہیں کہ یہاں کوئی بھی آجائے اور اپنی مرضی کا کام کرے.
انہوں نے خبردار کیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اپنی سمندری حدود پر ایک لمحہ بھی سمجھوتہ نہیں کرے گا، کسی کو بھی ہماری حدود میں نقل و حرکت کی اجازت نہیں دی جائے گی. خطے کے ممالک ہی اس علاقے کو سلامتی فراہم کرسکتے ہیں لہذا ہمیں اغیار کی امداد کی کوئی ضرورت نہیں ہے.
ایڈمیرل حبیب اللہ سیاری نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران باصلاحیت اور ذہین قوم ہے اور اسے بعض ممالک کی طرح کرایے پر دستیاب ہونے والی سلامتی کی ضرورت نہیں.
انہوں نے کہا کہ اگر آج اغیار ہمارے خطے سے نکل جائیں تو یہاں کے مسائل حل ہوں گے، جو لوگ سلامتی اور امن کا بہانہ بنا کر یہاں داخل ہوتے ہیں وہ در اصل بدامنی کو پھیلارہے ہیں جس طرح آج شام، عراق اور افغانستان کے حالات ہیں.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@