ایرانی سفارتکاروں کیخلاف البانیا کا اقدام ناقابل قبول، ترجمان کی شدید مذمت

تہران، 20 دسمبر، ارنا - ایرانی دفترخارجہ کے ترجمان نے البانیا میں ایرانی سفارتکاروں کے ساتھ ہونے والے سلوک کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس سازش میں امریکہ، صہیونی اور دہشتگرد عناصر شریک ہیں جن کا مقصد ایران یورپ تعلقات کو متاثر کرنا ہے.

''بہرام قاسمی'' نے جمعرات کے روز اپنے ایک بیان میں مزید کہا ہے کہ ہم سمجھتے ہیں کہ البانیا میں ہمارے سفارتکاروں کے ساتھ ہونے والا سلوک ایک سوچی سمجھی سازش ہے جس کا مقصد ایران یورپ تعلقات کو متاثر کرنا ہے.
انہوں نے کہا کہ البانیا امریکہ، صہیونیوں اور دہشتگرد گروہوں کی ایران فوبیا سازش کا شکار ہوا ہے. ایرانی سفارتکاروں کو ملک بدر کرنے کے البانیا کے اقدام کا کوئی جواز نہیں بلکہ یہ فیصلہ امریکہ اور صہیونی سیکورٹی اداروں کے دباؤ میں ہوا ہے.
قاسمی نے کہا کہ ایران اور البانیا کے درمیان ہمیشہ اچھے تعلقات رہے ہیں اور ہم وہاں کے قوانین اور اصولوں کا احترام کرتے ہیں جو ایران کی خارجہ پالیسی کا اہم جز ہے.
انہوں نے بتایا کہ البانیا کے اقدام کے بعد امریکہ اور ناجائز صہیونی ریاست نے اس فیصلے کا خیرمقدم کیا جبکہ ایسے واقعات میں امریکی صہیونی گٹھ جوڑ سے اصل حقیقت سامنے آتی ہے.
ترمان نے مزید کہا کہ ایسے وقت میں جب ایران اور یورپ مل کر امریکی پابندیوں کو ناکام بنانا چاہتے ہیں ایسی سازشیں بھی عروج پر پہنچی ہیں جس کا اصل مقصد ایران اور یورپی ممالک کے تعلقات کو متاثر کرنا ہے.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ بعض یورپی میڈیا نے کہا کہ البانیا نے ایرانی سفیر اور ایک سفارتکار کو ملک بدر کرنے کا فیصلہ کیا ہے. امریکی وزیرخارجہ اور مشیر قومی سلامتی وہ پہلے افراد تھے جنہوں نے اس فیصلے پر اپنی خوشی کا اظہار کیا.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@