کچھ عناصر پاک ایران کے اچھے تعلقات کو نہیں دیکھنا چاہتے ہیں: پاکستانی وزیر خارجہ

اسلام آباد، 17 دسمبر، ارنا – پاکستانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ کچھ عناصر اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان کے درمیان اچھے تعلقات کو نہیں دیکھنا چاہتے ہیں.

یہ بات "شاہ محمود قریشی" نے اتوار کے روز ایک پریس کانفرنس میں پاکستانی میڈیا کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان مشترکہ سرحدوں کی سلامتی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں پاک ایران سرحدی علاقوں کی سیکورٹی کو درہم برہم کرنے والے عناصر کو نظر انداز نہیں کرنا چاہیئے.
قریشی نے کہا کہ بے شک دونوں ممالک کے درمیان مشترکہ لمبی سرحدیں موجود ہیں جس کی بنا پر پاکستانی حکومت اس سرحدوں کو مستحکم اور امن بنانے کے لئے کوشش کر رہی ہے اور اسلامی جمہوریہ ایران بھی ہمارے ملک کے ساتھ پرامن تعلقات قائم کرنے کا خواہاں ہے.
انہوں نے گزشتہ تین مہینوں کے دوران ایرانی وزیر خارجہ کے دورے اسلام آباد پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان اچھے کثیرالجہتی تعلقات قائم ہیں.
پاکستانی وزیر خارجہ نے مغوی ایرانی سرحدی اہلکاروں کے حوالے سے کہا کہ دونوں ممالک کی حکومتیں ان کی بازیابی اور رہائی کے لئے سنجیدہ اقدامات اٹھ رہی ہیں.
تفصیلات کے مطابق 15اکتوبر کو پاک ایران سرحد کے قریب دہشتگردوں ںے انقلاب مخالف عناصر کے ساتھ مل کر ایران کے 14 سرحدی اہلکاروں کو اغوا کر لیا. ان اہلکاروں کو علی الصبح لولکدان کے سرحدی علاقے سے ایک دہشتگرد گروہ نے اغوا کیا.
یاد رہے کہ حالیہ دنوں میں ایران کی کوششوں اور پاکستان کے ساتھ ہونے والے تعاون کے بعد 5 مغوی ایرانی اہلکاروں کو دہشتگردوں سے آزاد کرایا گیا .
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@