پاکستان میں حمایت فلسطین پر کانفرنس، ایرانی مؤقف کی بھرپور تائید

اسلام آباد، 14 دسمبر، ارنا - پاکستانی دارالحکومت اسلام آباد میں حمایت فلسطین پر کانفرنس کا انعقاد کیا گیا جس میں شرکاء نے فلسطینی عوام کی لازوال حمایت کرنے پر اسلامی جمہوریہ ایران کے مؤقف کی بھرپور تائید کی.

تفصیلات کے مطابق، اس کانفرنس کا انعقاد ملکی یکجہتی کونسل کی جانب سے کیا گیا جس میں اعلی پاکستانی سیاسی اور مذہبی رہنماؤں نے شرکت کی.
پاکستان میں نائب ایرانی سفیر محمد سُرخابی، ایرانی ثقافتی قونصلٹ کے قائم مقام سربراہ محمد رضا کاکا اور بعض ممالک کے سفارتخانوں کے نمائندے بھی شریک تھے.
کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے نائب ایرانی سفیر نے کہا کہ فلسطین اسلام سے الگ نہ ہونے والا حصہ ہے اور اس پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا.
انہوں نے مزید کہا کہ ناجائز صہیونی ریاست کے خلاف الٹی گنتی شروع ہوچکی ہے اور وہ جلد ہی القدس پر ناجائز قبضہ چھوڑ دے گی.
پاکستان ملی یکجہتی کونسل کے سیکریٹری لیاقت بلوچ نے کہا کہ مصر، عمان اور سعودی عرب کے صہیونیوں کے ساتھ تعلقات قائم کرنے کی خبریں باعث تشویش ہیں.
لیاقت بلوچ جو جماعت اسلامی پاکستان کے بھی سیکرٹری جنرل ہیں، نے مزید کہا کہ ہمیں صہیونی ریاست کے خلاف بیدار ہونا ہوگا.
انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے ہمیشہ فلسطین پر دوٹوک مؤقف اپنایا ہے.
ایران کے ثقافتی قونصلٹ کے قائم مقام سربراہ نے اس موقع پر کہا کہ مسلم ممالک کو اکھٹے ہو کر فلسطینیوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرنا چاہئے.
مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ مسلمانوں کو اپنے خلاف ہونے والی سازشوں کا مقابلہ کرنے کے لئے ایک ہونا چاہئے.
انہوں نے مزید کہا کہ ناجائز صہیونی ریاست فلسطینیوں کی مزاحمت سے مزید کمزور ہورہی ہے اور وہ جلد ختم ہوجائے گی.
فلسطین فاونڈیشن پاکستان کے سیکریٹری جنرل صابر ابومریم نے اس موقع پر کہا کہ امریکہ چاہتا ہے کہ فلسطینی سنچری ڈیل کے تحت صہیونی ریاست کو تسلیم کریں.
انہوں نے مزید کہا کہ بدقسمتی سے بعض مسلم ممالک کھلم کھلا اور خفیہ طور پر صہیونیوں کے ساتھ تعلقات قائم کررہے ہیں.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@