ایران میں قومی سلامتی عوام کی مرہون منت ہے: ظریف

تہران، 14 دسمبر، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ انسانی حقوق قوانین کی پیروی صرف اخلاقی یا قانونی فرض نہیں بلکہ یہ عمل ہماری قومی سلامتی کے لئے ناگزیر ہے.

ان خیالات کا اظہار ''محمد جواد ظریف'' نے جمعہ کے روز ندائے ایرانیان جماعت کی سالانہ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ ہمیں قومی سلامتی کے تحفظ کے لئے عوام کی پشت پناہی کی ضرورت اور در حقیقت عوام کے بغیر ہم کچھ بھی نہیں.
انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران ایک اہم اور اثر و رسوخ رکھنے والا ملک ہے، ایران کا ہمیشہ اثر و رسوخ رہا اور آئندہ بھی رہے گا یہ ایک حقیقت ہے جو نہ صرف چالیس سال بلکہ گزشتہ 7 ہزار سال سے چلی آرہی ہے اور انشاء اللہ یہ حقیقت آئندہ نسل تک چلتی رہے گی.
ظریف نے کہا کہ آج اگر ایران طاقتور ہے تو اس کی وجہ عوام ہیں اور ملکی دفاع اور طاقت کی اصل بنیاد ایرانی قوم ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ آج مشرق وسطی کے ممالک کے مقابلے میں ایران کا دفاعی بجٹ سب سے کم ہے. مصر مشرق وسط کا دوسرا بڑا اسلحہ خریدنے والا ملک ہے. سعودی عرب نے گزشتہ سال 69 ارب ڈالر ہتھیار خریدے.
محمد جواد ظریف نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کا دفاعی بجٹ 16 ارب ڈالر سے نیچے ہے مگر جس وجہ سے آج ہم خطے میں طاقتور ہے وہ ہماری قوم ہے جس نے ملک کو طاقتور بنادیا ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ دنوں ایک امریکی سینیٹر نے کہا کہ اگر ہم سعودیوں کے ساتھ نہ ہوتے تو سعودی عرب میں ایک ہفتے کے اندر فارسی رواج ہوتی، امریکیوں کا کہنا ہے کہ سعودی عرب ہمارے بغیر دو ہفتے بھی زندہ نہیں رہ سکتے.
ظریف کا کہنا تھا کہ بحیثیت مسلمان اور اس خطے میں رہنے والے شخص کے طور پر مجھے شرم آتی ہے کہ کوئی ہمارے ہمسایوں کے بارے میں ایسی باتیں کرتا ہے.
انہوں نے کہا کہ ہم بڑے فخر سے یہ کہتے ہیں کہ اسلامی انقلاب کو آئے 40 سال بیت گئے مگر بیرونی دباؤ کے باوجود ہم اپنے پیروں پر کھڑے ہیں.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@