ایران کا فضائی دفاعی نظام میزائل 'صیاد-3' کی رینج بڑھانے کا فیصلہ

تہران، 14 دسمبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے ملکی ساختہ فضائی دفاعی نظام سسٹم ''صیاد-3'' کی رینج کو مزید بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے.

یہ بات خاتم الانبیاء ائیر ڈیفنس بیس کے ڈپٹی کمانڈر بریگیڈیئر جنرل ''علی رضا الہامی'' نے جمعہ کے روز ارنا نیوز کے نمائندے سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ آرمی کی خاتم الانبیاء ائیر ڈیفنس بیس بھی ملک کے دیگر اداروں کی طرح اسلامی انقلاب کی 40ویں سالگرہ کو منانے کے لئے مخصوص پروگراموں کا انعقاد کرے گی.
انہوں نے مزید کہا کہ اس وقت وطن عزیز کے دفاعی سائنسدان اور ماہرین فضائی دفاعی نظام صیاد-3 میزایل کی رینج کو مزید بڑھانے پر کام کررہے ہیں تا کہ آپریشنز میں اس کی بہتری صلاحیت ہو.
یاد رہے کہ ایران نے گزشتہ سال جولائی میں طیارہ شکن میزائل 'صیاد-3' کی پروڈکشن لائن کا افتتاح کردیا تھا.
ایرانی وزارت دفاع کے مطابق، صیاد-3 میزائل 120 کلومیٹر کی رفتار میں مار کرنے کی قابلیت اور زمین سے 27 کلومیٹر کے فاصلے پر پرواز کرسکتا ہے.
صیاد-3 میزائل اینٹی ریڈار جنگی طیارے، ڈرون، کروز میزائل، ہیلی کاپٹر اور دیگر پرواز کرنے والے اشیا کو نہایت تیز رفتاری سے اور بہ آسانی نشانہ بناسکتا ہے.
اس کے علاوہ صیاد-3 انفراریڈ سسٹم سے لیس ہے اور الیکٹرانک جنگوں کا مقابلہ کرنے کی بھرپور صلاحیت رکھتا ہے.
خاتم الانبیاء ائیر ڈیفنس بیس کے ڈپٹی کمانڈر نے مزید کہا کہ فضائی دفاعی نظام باور 373 جو ایرانی ایس-300 سے مشہور ہے، کی تیاری بھی آخری مراحل میں ہے اور اس کی جلد رونمائی کی جائے گی.
ان کے مطابق، ایرانی دفاعی نظام باور 373 کی صلاحیت روسی دفاعی نظام ایس-300 سے زیادہ ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@