امریکی پابندیوں کا مقصد ایران اور روس کو کمزور کرنا ہے: اعلی روسی رکن پارلیمنٹ

ماسکو، 11 دسمبر، ارنا - روس کے ایوان زیریں ' ڈوما' کے سنیئر رکن کا کہنا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور روس کے خلاف امریکہ اور اس کے اتحادی ممالک کی پابندیوں کا مقصد دونوں ملکوں کو کمزور کرنا ہے.

ان خیالات کا اظہار روسی پارلیمنٹ کی سیکورٹی اور اینٹی کرپشن کمیٹی کے ڈپٹی چیئرمین ''دمتری ساویلیف'' نے ارنا نیوز کے نمائندے کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کیا.
انہوں نے مزید کہا کہ سیکورٹی کے شعبے میں روس کے ایران کے ساتھ قریبی تعاون برقرار ہے کیونکہ ہم سمجھتے ہیں کہ امریکہ اور اس کے اتحادی پابندیوں کے ذریعے ہماری حکومتوں کو مفلوج کرنا چاہتے ہیں.
انہوں نے اپنے حالیہ دورہ ایران کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی اٹارنی جنرل، محکمہ داخل کے حکام، انسداد منشیات ادارے اور اراکین پارلیمنٹ کے ساتھ تعمیری ملاقاتیں ہوئیں جس میں مختلف مسائل پر تبادلہ خیال کیا گیا.
اعلی روسی رکن پارلیمنٹ نے ایران اور روس کے مشترکہ مالیاتی چینل کے قیام کا مطالبہ کیا تا کہ اس کے ذریعے سے پابندیوں کا مقابلہ کیا جاسکے کیونکہ بیرونی پابندیوں کا ایک اہم مقصد دونوں ممالک کے مالی شعبے کو نقصان پہنچانا ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ ایران اور روس کے درمیان مقامی کرنسیوں کے استعمال کے جلد نفاذ کو یقینی بنانا ہوگا جس سے دونوں ممالک کی تجارتی سرگرمیوں میں مزید اضافہ ہوگا.
دمتری ساویلیف نے تہران، ماسکو، باکو اور انقرہ کے درمیان چا فریقی سیاسی اتحاد کی تشکیل پر زور دیا جس کی مدد سے چاروں ممالک خطے میں مختلف شعبوں میں اجتماعی تعاون کو فروغ دے سکتے ہیں.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے 8 مئی کو غیرقانونی طور پر ایران جوہری معاہدے سے علیحدگی کا اعلان کردیا اور اس کے علاوہ ایران پر امریکی پابندیاں عائد کرنے کا بھی حکم جاری کردیا.
امریکی صدر نے ایران کو تنہائی کا شکار کرنے کے لئے اقتصادی دباؤ اور پابندیاں کا طریقہ کار اپنایا ہوا ہے جبکہ ایران نے اپنے وعدوں پر عمل کیا اور عالمی جوہری ادارہ بھی اس بات کی بارہا تصدیق کرچکا ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@