دنیا کو منشیات کیخلاف ایرانی کاوشوں کے ثمرات مل رہے ہیں: اعلی ایرانی عہدیدار

اسلام آباد، 11 دسمبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کی انسداد منشیات پولیس فورس کے سربراہ نے کہا ہے کہ 2018 کے دوران پاکستان اور افغانستان کے ساتھ مشترکہ سرحدوں پر 700 ٹن سے زائد منشیات پکڑ لی گئی ہیں.

یہ بات بریگیڈیر جنرل ''محمد مسعود زاہدیان'' نے منگل کے روز اسلام آباد میں انسداد منشیات پر سہ فریقی نشست کے موقع پر ارنا نیوز کے نمائندے کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہی.
ایران کی انسداد منشیات پولیس فورس کے سربراہ ایران، پاکستان اور افغانستان کی سہ فریقی نشست میں شرکت کے لئے اسلام آباد کے دورے پر ہیں.
پاکستان کی سہ فریقی اجلاس میں شریک ایرانی وفد کے سربراہ نے مزید کہا کہ ایران مشنیات کے خلاف ذمہ دارانہ کردار ادا کررہا ہے جس کے ثمرات عالمی برادری کو مل رہے ہیں.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ رواں سال کے شروع سے اب تک قانون نافذ کرنے والے اداروں کی اعلی جد و جہد سے سات سو ٹن سے زائد مختلف منشیات کو پکڑا گیا ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ آج اسلامی جمہوریہ ایران خطی اور عالمی سطح پر منشیات کے خلاف جنگ کا علمبردار ہے جبکہ ہماری فورسز اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے اس لعنت کے خاتمے کے لئے مثالی قربانیاں دی ہیں.
بریگیڈیر جنرل محمد مسعود زاہدیان نے بتایا کہ اسلامی تعلیمات کے مطابق ہمارا عزم مضبوط ہے اور کئی برسوں سے منشیات کے خلاف ہم کردار ادا کرتے چلے آرہے ہیں اور آج بھی وہی عزم اور نیت کے ساتھ منشیات کے خلاف جنگ میں ثابت قدم رہیں گے.
انہوں نے بتایا کہ دوسرے ممالک کے مقابلے میں ایران نے انسداد منشیات کے لئے متعدد اقدامات اٹھائے ہیں اور اس بات میں کوئی شک کی گنجائش نہیں ہے، جبکہ اس جنگ میں ہمارے چار ہزار شہری شہید ہوئے اور 12 ہزار افراد زخمی ہوچکے ہیں.
انہوں نے ایران، پاکستان اور افغانستان کے درمیان سہ فریقی تعاون کی نوعیت سے متعلق بتایا کہ اس عمل کا مقصد موجودہ صورتحال میں تعاون کو بڑھانا ہے تاہم بعض مراحل میں کمی پیشی ہے جسے مل کر حل کرنا ہوگا اور اس اجلاس میں مشترکہ تعاون کو درپیش مسائل کا جائزہ لیا جائے گا.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@