مشترکہ معاشی سیکورٹی مفادات کا حصول ایران پاکستان کی اہم ترجیح قرار

زاہدان، 10 دسمبر، ارنا - پاکستانی صوبے بلوچستان کے چیف سیکریٹری نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان کے درمیان مشترکہ اقتصادی اور سیکورٹی مفادات کے حصول دونوں ملکوں کی اہم ترجیح ہے.

یہ بات ڈاکٹر "اختر نذیر" نے پیر کے روز ایرانی صوبے سیستان و بلوچستان کے شہر زاہدان میں پاک ایران سرحدی کمیشن کے 22ویں اجلاس کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہی.
چیف سیکریٹری بلوچستان مشترکہ بارڈر کمیشن کے اجلاس میں پاکستانی وفد کی قیادت کررہے ہیں.
اس موقع پر انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان مذہبی، تاریخی اور تجارتی اشتراکات کا ذکر دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے لئے کثیرالجہتی تعلقات کی مزید مضبوطی نہایت اہم ہے.
ڈاکٹر نذیر نے چابہار میں حالیہ دہشتگردی حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ حکومت پاکستان اور پاکستانی قوم اس واقعے کے متاثرین، ایرانی قوم اور حکومت کے ساتھ دلی تعزیت کا اظہار کرتی ہیں.
انہوں نے مشترکہ سرحدی علاقوں میں مشترکہ معاشی تعلقات اور سیکورٹی کو مزید بڑھانے پر زور دیا اور کہا کہ دونوں ممالک مشترکہ تعاون کے ذریعہ چیلنجز کا مقابلہ کرسکتے ہیں.
چیف سیکریٹری بلوچستان نے کہا کہ اس اجلاس کا اہم مقصد دونوں ممالک کے درمیان مشترکہ سرحدی مسائل کو حل کرنا ہے..
انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان نے دہشتگردی سے نمٹنے کے لئے بہت قربانیاں دی ہیں جبکہ گزشتہ سالوں کے دوران 70 ہزار پاکستانی شہری دہشتگردوں کی کاروائیوں میں جاں بحق ہوئے ہیں.
انہوں نے کہا کہ پاکستانی فوج اور سیکورٹی اداروں نے دہشتگرد عناصر اور تشدد کی کاروائیوں کے خاتمے کے حوالے سے سنجیدہ اقدامات اٹھائے ہیں.
یاد رہے کہ ایرانی شہر زاہدان میں اسلامی جمہوریہ ایران اور پاکستان کے درمیان مشترکہ سرحدی کمیشن کے 22ویں اجلاس کا انعقاد کیا گیا ہے.
اس اجلاس میں دونوں ممالک کے اعلیٰ حکام شریک ہیں.اور 'محمد ہادی مرعشی' ایرانی وفد اور 'اختر نذیر' پاکستانی وفد کی قیادت کر رہے ہیں.
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@