اوپیک فیصلے نے امریکیوں کی شکست میں اضافہ کردیا: ایرانی صدر

تہران، 10 دسمبر، ارنا - صدر اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ تیل برآمد کرنے والے ممالک کی تنظیم اوپیک کے حالیہ فیصلے سے امریکی انتظامیہ کے لئے ایک اور شکست رقم ہوئی ہے.

ڈاکٹر ''حسن روحانی'' نے گزشتہ روز تہران میں کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ امریکی مداخلت کے سامنے اوپیک ممالک کی مزاحمت قابل قدر ہے.
اس اجلاس میں ایرانی وزیر تیل نے اوپیک تنظیم کے حالیہ اجلاس سے متعلق رپورٹ پیش کی جس پر ڈاکٹر روحانی نے حکومتی پالیسی بالخصوص وزیر تیل کی کوششوں کو سراہا.
انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ نے اوپیک معاملات میں دخل اندازی اور تیل پیداوار کو متاثر کرنے کی کوششیں تو کیں مگر اوپیک ممالک کے تعاون بالخصوص ایرانی حکومت کی موثر حکمت عملی سے امریکیوں کو شکست ملی.
یاد رہے کہ تیل برآمد کرنے والے ممالک کی تنظیم (OPEC) نے تیل پیداوار کی سطح کو 12 لاکھ بیرل تک کم کرنے پر اتفاق کیا جبکہ اسلامی جمہوریہ ایران کو پابندیوں کی وجہ سے اس فیصلے سے استثنی مل گئی ہے.
آسٹریا کے دارالحکومت ویانا میں اوپیک ممالک کے دو روزہ طویل مذاکرات کے بعد یہ اتفاق کیا گیا تھا کہ ایران کے علاوہ تمام اراکین اپنی تیل پیداوار کو 12 لاکھ بیرل تک کم کریں گے.
اس فیصلے کے تحت اوپیک اراکین 8 لاکھ اور نان اوپیک ممبران 4 لاکھ بیرل تیل اپنی پیداوار سے کم کریں گے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@