تیسرا فریق ایران روس تعلقات کو خراب نہیں کرسکتا: صدر روحانی

تہران، 8 دسمبر، ارنا- صدر اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ بعض ممالک ایران اور روس کے قریبی تعلقات بالخصوص علاقائی اور عالمی امور پر تعاون کو ہرگز متاثر نہیں کرسکتے ہیں۔

ڈاکٹر روحانی نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے ایران اور روس کے درمیان علاقائی تعاون کا سلسلہ نتائج حاصل ہونے تک جاری رہے گا.
ان خیالات کا اظہار صدر روحانی نے تہران میں منعقدہ چھ ملکی اسپیکرز کانفرنس کے موقع پر روسی پارلیمنٹ ڈوما کے اسپیکر 'ویاچسلاو والودین' کے ساتھ ملاقات کرتے ہوئے کیا۔
انہون نے گزشتہ سالوں کے دوراں، دونوں ممالک کے دوستانہ تعلقات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ حالیہ سالوں میں ایران اور روس کے در میان کثیر الجہتی تعلقات میں مزید اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔
صدر روحانی نے مزید کہا کہ ایران، روس کے ساتھ کثیرالجہتی تعلقات کو بڑھانے کیلئے اپنی تمام صلاحیتوں کو بروئے کار لانے پر تیار ہے۔
انہوں نے گزشتہ 5 سالوں کے دوران، ایران اور روس کے حکام کی کوششوں کے ساتھ دونوں ممالک کے تعلقات میں مثبت تبدیلی آنے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ خوش قسمتی سے ہم نے باہمی تعلقات کی توسیع کے سلسلے میں اپنی صلاحیتوں سے بخوبی فائدہ اٹھایا ہے۔
ایرانی صدر نے مزید کہا کہ مشترکہ سرمایہ کاری ، زارعت، ٹرانسپورٹیشن اور توانائی کے شعبوں میں تعاون سمیت " اینچہ برون_ گرمسار" ریلوے لائن کی تعمیر بھی دونوں ممالک کے درمیان کامیاب تعاون کی مثالوں کے چند اہم نمونے ہیں۔
ڈاکٹر روحانی نے دونوں ممالک کے درمیان توانائی، سائنس، ٹیکنالوجی اورعلاقائی تعاون کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور روس کے درمیان مذاکرات اور تعاون کا سلسلہ، بالخصوص شامی مسئلے کے حل کے حوالے سے، نتایج حاصل ہونے تک جاری رہے گا۔
صدر روحانی نے ریلوے لائن کے ذریعے ایران کے "بندرعباس" اور " رشت" کے شہروں کو آذربائیجان کے شہر " آستارا" سے منسلک کرنے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ اسی راستے کے ذریعے بھارت سے مسکو میں مصنوعات کی منتقلی کے ٹایم میں نصف کمی آئے گی۔
اس موقع پر روسی پارلیمنٹ ڈوما کے اسپیکر نے دونون ممالک کے پارلیمانی تعلقات کی توسیع پر زور دیتے ہوئے کہا کہ آج، دو حکومتوں کے درمیان تعاون کو بڑھانے کی ضرورت کے باہمی فہم و تفہیم ہے اور یقینا ایران اور روس کی پارلیمنٹس کو اس رجحان کی بھی حمایت ملے گی.
انہوں نے دونوں ممالک کے اقتصادی تعلقات کی توسیع میں باہمی بینکاری کے مسائل کو جلدی سے حل کرنے کی ضررت پر زوردیا۔
انہوں نے روسی صدر کی جانب سے اسلامی جمہوریہ ایران اور اقتصادی تنظیم یوریشیا کے درمیان آزدانہ تجارتی زون کے قیام سے متعلق سمری کی توثیق پر تبصرہ کرتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا کہ ایرانی پارلیمنٹ بھی اس کو جلدی سے منظوری دے۔
روسی پارلیمنٹ ڈوما کے اسپیکر نے کہا کہ روسی حکومت، ایران کے ساتھ سارے طے پانے والے معاہدوں پر عمل درآمد کیلئے پر عزم ہے اور اسی راستے میں کسی بھی تعاون سے دریغ نہیں کرے گا۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@