چابہار منصوبہ علاقائی سرمایہ کاروں کیلئے بہترین موقع ہے: ایرانی صدر

تہران، 8 دسمبر، ارنا- ایرانی صدر نے افغان پارلیمنٹ کے اسپیکر کے ساتھ ملاقات میں دونوں ممالک کے تعلقات میں نئی تبدیلی آنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ چابہار منصوبہ علاقائی سرمایہ کاروں کے لئے بہترین موقع ہے۔

یہ بات،اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر "حسن روحانی " نے تہران میں منعقدہ چھ ملکی اسپیکرز کانفرنس کے موقع پر، افغان پارلیمنٹ کے اسپیکر "عبدالرئوف ابراہیمی" کے ساتھ ملاقات کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے ایران اور افغانستان کے تعلقات کی وسیع پہلوؤں پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان میں دہشتگردی کی روک تھام اور قیام امن و استحکام سیمت اس ملک میں معیشت کی توسیع ہمارے نزدیک بہت اہمیت کا حامل ہے-
صدر روحانی نے ایران اور افغانستان کے درمیان تعلقات میں نئی تبدیلی آنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اقتصادی شعبوں میں افغان حکومت کی حمایت کے لئے کسی بھی کوشش سے دریغ نہیں کریں گے۔
انہوں نے مختلف شعبوں میں دونوں ممالک کے درمیان بڑھتے ہوئے تعلقات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران اور افغانستان کے مشترکہ ریلوے لائن منصوبے کے سلسلے میں ہم نے افغانستان کی سرحد تک ریلوے لائنز کو بچھالیا ہے اور اس کو افغانستان کے شہر "ہرات" سے منسلک کرنے لئے افغان حکومت کے ساتھ ہرطرح کی مدد پر تیار ہیں۔
ایرانی صدر نے کہا کہ ایران کے چابہار اور افغانستان کے "زاہدان" شہروں کے درمیان ریلوے لائن منصوبے پر جلدی سے عمل درآمد کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔
صدر روحانی نے کہا کہ چابہار منصوبہ دونوں ممالک کے درمیان اقتصادی تعاون کی فروغ سیمت علاقائی سرمایہ کاری کےلئے سرمایہ کاروں کے لئے اچھے مواقع فراہم کرنے میں کلیدی کردار ادا کر رہا ہے۔
انہوں نے منشیات کی پیداور اور تجارت کے مسئلے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ منشیات کی پیداوار اور اسمگلنگ نے ایران اور افغانستان کو بہت نقصان پہنچایا ہے، اور اس کا سنجیدہ حل صرف باہمی تعاون پر منحصر ہے.
صدر روحانی نے مزید اضافہ کیا کہ ہم اس میدان میں اپنے تجربات کی بنیاد پر انٹی نارکوٹس کے سلسلے میں افغان حکومت کی مدد کرنے کے لئے تیار ہیں.
اس موقع پر افغان پارلمینٹ کے اسپیکر نے دونوں ممالک کے مشترکہ ثقافتی اور سماجی تعلقات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ہم ایران کو ایک ایسے پڑوسی کے طور پر دیکھتے ہیں جو ہمیشہ مشکل حالات میں ہمارے ساتھ شانہ بشانہ کھڑا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ دونوں ممالک نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بہت قربانیاں دی ہیں اور ہمیں یقین رکھتے ہیں کہ دہشت گردی کی روک تھام کے لئے دونوں ممالک کا باہمی تعاون نہ صرف افغانستان بلکہ خطے میں قیام امن و استحکام برقرار رکھنے میں مدد ملے گی۔
انہوں نے ایرانی حکومت کی جانب سے افغان پناہ گزینوں کی پذیرائی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ایران کی حکومت کیجانب سے افغان پناہ گزینوں کے لئے تعلیم کے مواقع فراہم کرنا افغان حکومت اور عوام کی بڑی خدمت ہے-
انہوں نے دونوں ممالک کے تعلقات میں چابہار بندرگارہ کے کلیدی کردار پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ایران کے ساتھ تعاون کی توسیع کے لئے پختہ عزم رکھتے ہیں۔
افغان صدر کے پارلیمنٹ نے کہا کہ ان کا ملک انٹی نارکوٹکس سمیت مختلف شعبوں میں ایران کی حمایت اور تعاون کا خواشمند ہے۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@