مصنوعی ذہانت اور ربوٹ کی ٹیکنالوجی تیل برآمدات کی جگہ لے سکتی ہے: ایران

تہران، 8 دسمبر، ارنا – ایرانی صوبے قزوین کی اوپن یونیورسٹی کے سربراہ نے کہا کہ مصنوعی ذہانت اور ربوٹ کی ٹیکنالوجی کا استعمال تیل برآمدات کی جگہ لے سکتا ہے.

یہ بات ' مرتضی موسی خانی' نے ایرانی جزیرہ کیش میں ایشیا پیسفیک کے بین الاقوامی ربوکپ اور مصنوعی انٹیلی جنس مقابلوں کی افتتاحی تقریب میں خطاب کرتے ہو‏ئے کہی.
ایران کی قومی ربوکپ کمیٹی موسی خانی' نے کہا کہ اس مقابلوں کے انعقاد کا مقصد میں مصنوعی انٹیلی جنس اور روبوکپ کی سائنس کو فروغ دینا ہے.
ان مقابلوں میں ایشیا اور پیسفیک کے 15 ممالک بشمول ایران، روس، قازقستان، چین، سنگاپور، جنوبی کوریا، بھارت اور متحدہ عرب امارات نے حصہ لیا ہے.
تفصیلات کے مطابق، ایشیا پیسفیک کے عالمی ربوکپ اور مصنوعی انٹیلی جنس مقابلے 7 سے 9 دسمبر تک جزیرہ کیش میں جاری ہے جس میں 32 غیر ملکی ٹیمیں شریک ہیں.
9410*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@