یورپ ایس پی وی نظام کو جلد فائنل کرے گا: ظریف

تہران، 5 دسمبر، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ یورپی ممالک ایران سے متعلق مخصوص مالیاتی میکنزم (SPV) کو عنقریب فائنل کریں گے اور اس منصوبے کے تمام مراحل کو امریکی تخریب کاری سے بچانے کے لئے کو خفیہ رکھا گیا ہے.

''محمد جواد ظریف'' نے آج تہران میں کابینہ کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ یورپی ممالک چاہتے ہیں کہ ایس پی وی نظام کے فائنل ہونے تک اس کے تمام مراحل کو خفیہ رکھا جائے کیونکہ اگر امریکہ کو اس سے متعلق کسی بھی پیشرفت کی اطلاع ملی تو وہ اسے نقصان پہنچائے گا.
ظریف نے ایران کی میزائل سرگرمیوں سے متعلق امریکی حکام کے حالیہ بیانات کے ردعمل میں کہا کہ موجودہ اور سابقہ امریکی انتظامیہ اس بات سے اچھی طرح واقف تھی اور ہے کہ نہ جوہری معاہدے اور نہ ہی سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 میں ایران کے میزائل پروگرام پر کوئی پابندی ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ سابق امریکی جوہری مذاکرات کار ونڈی شرمن نے سینیٹ کے اجلاس میں بتایا تھا اور دو مہینے پہلے امریکی ایلچی برین ہوک نے بھی واضح طور پر یہ کہا تھا کہ قراداد 1929 میں ایران کو میزائل تجربے سے منع کیا گیا تھا جبکہ قرارداد 2231 میں صرف ایران سے درخواست کی گئی ہے.
ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ یقنی طور پر ایران کا کوئی جوہری پروگرام نہیں لہذا یہاں جوہری ہتھیار لے جانے والے میزائل بھی نہیں بنائے جاتے در حقیقت ہمارے میزائل کی نوعیت روائتی ہتھیار ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ ظاہری سی بات ہے کہ امریکہ کو جوہری معاہدے سے اپنی علیحدگی اور اس معاہدے کی مسلسل خلاف ورزی کو چھپانے کے لئے کوئی نئی داستان ایجاد کرنی ہوگی جبکہ سب نے دیکھا کہ سلامتی کونسل نے اس بے جا دعوے کا جائزہ تک نہیں لیا.
ظریف نے خلیج فارس میں امریکی بحریہ کے جہازوں کی واپسی اور اس حوالے سے حکومت ایران کے مؤقف پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم سمجھتے ہیں کہ خلیج فارس میں اغیار کی موجودگی سے صورتحال پیچیدہ ہوگی جس سے کسی کو فائدہ نہیں ملے گا.
انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران پوری طاقت کے ساتھ اپنی زمینی اور سمندری حدود کا دفاع کرے گا اور اس مقصد کے لئے وطن عزیز کی مسلح افواج ہمہ وقت تیار ہیں.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@