ایران کا بیلسٹک میزائل تجربہ یو این قرارداد کی خلاف ورزی نہیں

نیو یارک، 4 دسمبر، ارنا - امریکہ میں قائم بین الاقوامی انسٹی ٹیوٹ برائے سٹریٹجک سٹڈیز (IISS) کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر نے کہا ہے کہ ایران کا بیلسٹک میزائل تجربہ سلامتی کونسل کی قرار داد 2231 کی خلاف ورزی نہیں ہے.

''مارک فیتز پٹریک'' نے آئی آئی ایس ایس ادارے کی ویب سائیٹ میں شائع ہونے والے اپنے ایک مضمون میں مزید کہا کہ ایران کے میزائل پروگرام کے خلاف حالیہ امریکی الزامات ٹرمپ انتظامیہ کی بے بسی کو ظاہر کرتے ہیں.
انہوں نے کہا کہ میزائل تجربے اشتعال انگیز ہوسکتے ہیں مگر یہ کوئی خلاف ورزی نہیں جبکہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 سے صرف ایران یہ مطالبہ کیا گیا ہے کہ جوہری ہتھیار لے جانے کی صلاحیت رکھنے والے میزائل کا تجربہ نہ کرے.
عالمی امور کے امریکی ماہر کا کہنا تھا کہ امریکی وزیر خارجہ مائیک پمپئو کا شاید عالمی قوانین سے کوئی واقفیت نہیں ہے، امریکہ نے گزشتہ ماہ یہ دعویٰ کیا تھا کہ ایران کیمیائی ہتھیاروں سے متعلق اپنے غیرقانونی پروگرام کو جاری رکھا ہوا ہے جبکہ گزشتہ مارس میں امریکہ نے خود کہا تھا کہ ایران کے پاس کوئی کیمیائی ہتھیار نہیں ہے.
مارک فیتز پٹریک نے ایران کے حالیہ میزائل تجربے سے متعلق امریکی وزیر خارجہ کے ردعمل پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہتھیار اور بھاری وزن سے میزائل کے مار کرنے کے فاصلہ کم ہوجاتا ہے دوسری جانب یورپ کے جنوب مشرقی خطے سے ایران کو کوئی خطرہ لاحق نہیں ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@