شام میں ہمیں فوجی بیس کی کوئی ضرورت نہیں: ایرانی کمانڈر

تہران، 4 دسمبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کی مسلح افواج کے سنیئر ترجمان نے ایران کی عراق و شام میں مداخلت کو سختی سے مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران کو شام میں کسی فوجی بیس کی ضرورت نہیں ہے.

بریگیڈیئر جنرل "ابوالفضل شکارچی" نے ارنا نیوز ایجنسی سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ ہمیں شام میں فوجی بیس کی کوئی ضرورت نہیں جس پر کسی نے حملہ کرنا ہو.
اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران شام اور عراق کی حکومتوں کی باضابطہ درخواست پر انھیں فوجی مشاورت فراہم کر رہا ہے لہذا ایران کی ان ممالک میں موجودگی بالکل قانونی ہے.
ایرانی مسلح افواج کے ترجمان نے شام میں ایران اور روس کے درمیان تعاون پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک عسکری مشاورت کے حوالے سے تعاون کررہے ہیں.
انہوں نے شام میں ایرانی مراکز کو نشانے بنانے کے دعوے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ شام میں ایران کوئی مستقل مرکز نہیں جسے نشانہ بنایا جائے.
انہوں نے مزید کہا کہ تاہم شام میں عسکری کے مراکز پر بمباری کے دوران اس بات کا امکان ہے کہ ایران کے عسکری مشیروں اور اہلکاروں کو نقصان پہنچے.
ایرانی جنرل نے کہا کہ ایران کی شام میں موجودگی کے خلاف جو باتیں ہورہی ہیں وہ صرف امریکی بہانہ جس کی بنیاد صہیونیوں کی ہرزہ سرائی ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ عراق اور شام میں مسلح افواج فوج اور عوام اپنے دشمنوں کے خلاف جنگ میں شریک ہیں اور اس معرکے میں ایران کا کوئی براہ راست کردار نہیں.
ایرانی مسلح افواج کے سنیئر ترجمان نے ایران کے حالیہ میزائل تجربے کے حوالے سے امریکی الزام کے حوالے سے کہا کہ ایران اپنی میزائل سرگرمیوں پر کسی کے سامنے جواب نہیں اور نہ ہی اس حوالے سے ہمیں کسی ملک سے اجازت لینے کی ضرورت نہیں ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ کے میزائل پروگرام کا مقصد دوسرے ممالک پر جارحیت، قبضہ اور اپنے مفادات کے لئے دوسروں کو تباہ کرنا ہے مگر اسلامی جمہوریہ ایران ہرگز ایسے مقاصد کے حق میں نہیں ہے.
جنرل شکارچی نے کہا کہ ایران اپنے قومی مفادات کے تحفظ اور ممکنہ جارحیت کو روکنے کے لئے اپنی میزائل صلاحیت میں مزید اضافہ کرے گا.
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ میزائل پروگرام اسلامی جمہوریہ کی بنیادی ضروریات میں سے ایک ہے لہذا ملکی دفاع کو مزید ناقابل تسخیر بنانے کے لئے اس شعبے میں پیداوار اور اسے فروغ دینے کا سلسلہ جاری رہے گا.
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@