عنقریب اٹلانٹک اوشین میں اپنی سرگرمیوں کا آغاز کریں گے: ایرانی نیول چیف

تہران، 3 دسمبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کی بحریہ کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایرانی نیوی جلد مستقبل میں 'بحر اقیانوس' میں اپنی سرگرمیوں کا آغاز کرے گی.

یہ بات ایڈمیرل "حسین خانزادی" نے ایران کے "دافوس" کمانڈ اینڈ سٹاف کالج کے افسروں کے ساتھ ملاقات کرتے ہوئے کہی۔
انہون نے کہا کہ بین الاقوامی برادری کے ساتھ تعاون اور تجارتی جہازوں کو سیکیورٹی فراہم کرنے کے لئے، ہم نے 58 بحری جہازوں کو خیلج عدن میں تعینات کیا ہے۔
انہون خلیج عدن میں ایرانی بحری جہازوں کی موجودگی کو موثر قرار دے کر کہا ایرانی بحری جہازوں نے سمندری قزاقوں کی روک تھام کے لئے اعلی کارگردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔
انہوں نے ایران کے خلاف بڑے پیمانے پر پروپیگنڈے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ہماری دشمنوں نے علاقے میں دفاعی ڈپلومیسی کو ترقی کی اجازت نہیں دی، لیکن دفاعی ڈپلومیسی، مستقبل قریب میں ایران کے لئے طاقت اور وقار لائے گی.
ایرانی نیول چیف نے دفاعی ڈپلومسی میں نیوی کےکردار کی اہمیت پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ سمندر میں طاقتور موجودگی، بحریہ کی طرف سے پرچم کی نمائش اور مختلف ممالک کے بندرگاہوں کا دفاعی دورہ، طاقت کی سطح کا مظاہرہ ہے.
ایڈمیرل خانزادی نے کہا کہ مغرب، ایران کو دنیا میں الگ کرنے کے لئے ہماری دفاعی ڈپلومیسی کو روکنے کی کوشش کررہا ہے.
انہوں نے ایرانی دارلحکومت تہران میں بحر ہند نیول سمپوزیم کے انعقاد کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اسی طرح کے اجلاس کا انعقاد، ہمارے اتحاد و یگانگت کا مظاہرہ کر رہا ہے۔
انہوں نے بحیرہ روم کی 2 گزرگاہوں میں ایرانی بحری جہازوں کی موجودگی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہم یقینی طورپر مستقبل قریب میں اٹلانٹک اوشین میں اپنی سرگرمیوں کا آغاز کریں گے۔
9467*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@