یمن میں جاری بحران کا خاتمہ عالمی ذمہ داری ہے: ایران

تہران، 3 دسمبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے سوئڈن میں یمنی فریقین کے درمیان مذاکرات کئے دور کا خیرمقدم کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا ہے کہ یمن میں جاری بحران اور انسانی المیہ کو ختم کرنا عالمی برادری کی ذمے داری ہے.

دفترخارجہ نے پیر کے روز اپنے ایک جاری کردہ بیان میں کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اقوام متحدہ کی نگرانی میں سوئڈن میں یمنی فریقین کے درمیان مذاکرات کی حمایت کرتا ہے.
بیان کے مطابق، ایران تمام یمنی گروہوں کو دعوت دیتا ہے کہ سوئڈن میں مذاکرات کو کامیاب بنانے کے لئے تعمیری کردار ادا کریں اور اس کے علاوہ باہمی اعتماد کی بنیاد پر ایک مشترکہ نتیجہ نکالا جائے جس سے یمن میں عوام کے رنج و غم کا خاتمہ کیا جاسکے.
اس بیان میں یمنی بحران کے خاتمے کے لئے ایران کے چار نکاتی امن منصوبہ کا ذکر کیا گیا اور مزید کہا گیا ہے کہ یمنی مسئلے کو صرف سیاسی طریقوں سے حل کیا جاسکتا ہے لہذا عالمی برادری اس حوالے سے تعمیری اور سنجیدہ کردار ادا کرے اور اس بات کا بھی خیال رکھا جائے یمنی عوام بیرونی خواہشات ہرگز مسلط نہ ہوں.
ایرانی دفترخارجہ کے بیان کے مطابق، یمن کے خلاف گزشتہ چار سالوں سے جاری جنگ میں خونریزی، نقصانات اور انسانی بحران کے سوا کچھ نہیں ملا جبکہ اس جنگ میں ہزاروں نہتے افراد بشمول خواتین اور بچے جاں بحق ہوئے.
بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران عالمی برادری کے ساتھ ہر طرح کے تعاون کے لئے آمادہ ہے جس کا مقصد یمن میں بحران کا فوری خاتمہ کرنا ہے.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ یمن سے متعلق ایران کے چار نکاتی امن منصوبے میں جنگ بندی کے نفاذ اور جارحیت کی فوری بندش، انسانی ہمدردی کے تحت یمن کو امدادی اشیا کی فراہمی، تمام یمنی فریقین کے درمیان قومی مذاکرات اور مشترکہ حکومت کی تشکیل، شامل ہیں.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@