ظریف کا ایرانی میزائل پروگرام کیخلاف پمپئو کے الزام پر ردعمل

تہران، 3 دسمبر، ارنا - ایرانی وزیر خارجہ نے ملک کی میزائل سرگرمیوں کے خلاف امریکی وزیرخارجہ کے حالیہ بیان کے ردعمل میں کہا ہے کہ امریکہ ایران پر اس قرارداد کی خلاف ورزی کا الزام لگارہا ہے جس کی وہ خود پہلے سے ہی خلاف ورزی کرچکا ہے.

''محمد جواد ظریف'' نے مائیک پمپئو کے سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 سے متعلق اشتعال انگیز بیان پر اپنے ردعمل میں کہا کہ امریکہ نہ صرف خود اس قرارداد کی خلاف ورزی کر بیٹھا بلکہ دوسرے ممالک کو اس پر عمل کرنے کی صورت میں سزا دینے کی دھمکیاں دے رہا ہے.
انہوں نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں ایران پر جھوٹے الزامات لگانے کے امریکی دوہرے معیار کا ذکر کرتے ہوئے مزید کہا کہ دوہرے معیار اور ماورائے حقائق باتیں کرنا امریکی پالیسی کا ایک حصہ بن چکا ہے.
ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ بعض ممالک امریکہ کی غیرقانونی پابندیوں کا ساتھ نہیں دینا چاہتے جبکہ امریکہ ان ممالک کو بھی سزا دینے کی دھکمیاں دے رہا ہے.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ امریکی وزیر خارجہ مائیک پمپئو نے ایک نئے اور بے بنیاد الزام میں کہا تھا کہ ایران درمیانے رینج کے بیلسٹک میزائلکے تجربے سے سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 کی خلاف ورزی کا مرتکب ہوا ہے.
ایرانی ترجمان دفترخارجہ نے اس الزام کے ردعمل میں کہا کہ پمپئو میزائل سے متعلق ایرانی پالیسی سے واقف نہیں، ایران کی پالیسی واضح ہے اور ہم ایک بار پھر یہ اعلان کرتے ہیں کہ میزائل پروگرام اندرونی معاملہ ہے جس کا مقصد جارحیت نہیں بلکہ ملکی دفاع کو مضبوط بنانا ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@