عالمی برادری ایران مخالف امریکی پابندیوں کیخلاف اٹھ کر کھڑی ہوئی ہے: ایرانی وزیر خارجہ

استنبول، 30 اکتوبر، ارنا- ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ عالمی برادری ایران مخالف امریکی پابندیوں کے خلاف اٹھ کر کھڑی ہوئی ہے اور اس سلسلے میں، ہمسایہ ممالک سمیت یورپی ملکوں نے بھی امریکی ایک جانبہ اقدامات کا بخوبی مقابلہ کیا ہے۔

یہ بات اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے آج بروز منگل، استنبول میں ارنا نمائندے کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے استنبول میں، ایران، ترکی اور آذربائیجان کے وزرائے خارجہ کے سہ فریقی اجلاس کے موقع پرکہا کہ امریکہ، ایران کے خلاف پابندیوں لگانے کے ذریعہ اپنے متوقع مقاصد کو حاصل کرنے میں کامیاب نہیں رہا۔
ظریف نے مزید کہا کہ آج بین الاقوامی برادری کو کسی ایسے انتخاب کا سامنا کرنا پڑتا ہے جو ایران اور ایران جوہری معاہدے سے متعلق نہیں ہے، اور اس کا انتخاب غیر قانونی طریقوں کے خلاف قانونی طریقہ کار کی حمایت کرنا ہے۔
انہوں نے امریکہ کی جانب سے ایران کے خلاف پابندیوں لگانے کے فیصلے کو بین الاقوامی قوانین کی کھلی خلاف ورزی قرار دیتے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ اصولوں کی خلاف ورزی کرنے والا واحد ملک قوانین کی پیروی کرنے والے ممالک کو سزا دینا چاہتا ہے اور امریکہ کا یہ طریقہ عالمی مرتب نو پر منفی اثرات مرتب کر دے گا۔
انہوں نے ایران مخالف امریکی پانبدیوں کے سامنے ترکی کے صدر اور وزیر خارجہ کی موقفوں کی قدردانی کرتے ہوئے کہا کہ بعض غیر ملکی نجی سیکٹر کمپنیوں کو ایران کے ساتھ اپنے طریقہ کار کو تبدیل کرنے کا امکان ہے لیکن ترکی جیسے ممالک ایران کے ساتھ تعلقات کو کسی دوسرے ملک کی مرضی کی خاطر نقصان پہنچنے کی اجازت نہیں دیتا ہے۔
ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ ترکی اور آذربائیجان، پابندیوں کے خلاف ایران کی موقف کی حمایت کرتے ہوئے ایران کے ساتھ باہمی تعاون کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔
ظریف نے کہا کہ ترکی میں منعقد وزرائے خارجہ کے سہ فرقی اجلاس میں، ٹرانزٹ،توانائی، سیاحت اورعلم پر مبنی تعاون کے موضاعات پر بات چیت ہوئی۔
انہوں نے کہا کہ آج کا اجلاس انتہائی موثر اور مثبت تھا اور اس میں فیصلہ کیا گیا کہ ترکی، ایران اور آذربائیجان کے سہ فریقی اجلاس کا دوسرا دور ایران میں منعقد کیا جائے گا۔

**274*9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@