ایران سے تیل کی درآمدات کو بالکل بندکرنا ناممکن ہے: بھارتی تجزیہ کا
ر

تہران، 28 اکتوبر، ارنا- بھارتی ماہر برائے امور اقتصادی نے کہا ہے کہ امریکہ کی درخواستوں کے باوجود ایران سے تیل کی درآمدات کو مکمل طور پر بند کرنا ناممکن ہے کیونکہ ایران، بھارت کو تیل فراہم کرنے والا سب سے بڑے ملکوں میں سے ایک ہے۔

رپورٹ کے مطابق بھارتی ماہر برائے امور اقتصادی 'منہاز مرچنت' کا کہنا ہے کہ بھارت نے امریکی دباؤ سے چھٹکارا پانے کے لئے ایران سے تیل کی درآمدات کو کم کردیا ہے لیکن ایران سے تیل کی درآمدات کو بالکل بند کرنا، ناممکن ہے۔
انہوں نے کہا کہ بھارت نے ایران پر امریکی پابندیوں کے اثرات کے تدارک کے لیے کچھ انتظامات کر رکھے تھے۔ مثال کے طور پربھارت نے ڈالر کے بجائے ریال-روپے کا معاہدہ کر رکھا تھا جس کے تحت تیل کی قیمت روپے میں ادا کی جاسکتی تھی۔
بھارتی ماہر برائے امور اقتصادی نے مزید کہا کہ امریکہ اور بھارت کے درمیان حقیقی تنازع ایران کے خلاف امریکی پابندیوں کے نئے دور کے آغاز سے شروع ہوجاتا ہے۔
انہون نے کہا کہ دہلی اور واشنگٹن کے کشیدگی میں اضافہ ہونے کے تناظر میں بھارت، امریکہ اور خطے کے دوسرے ممالک کے ساتھ تعلقات میں توازن برقرار رکھنے کی کوشش کر رہا ہے۔
مرچنت نے کہا کہ ایران سے تیل کی خریداری کے علاوہ، روس سے اس -400 میزائیل خریدنے کی وجہ سے بھارت-امریکہ تعلقات کشیدگی کا شکار ہوگئے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ لیکن ان تمام مسائل کی روشنی میں، امریکہ، ایران کی تیل اور روسی ہتھیاروں کی وجہ سے کبھی بھی اپنے اسٹریٹجک اتحادی (بھارت) کے ساتھ تعلقات سے دستبردار نہیں ہوگا۔


**274*9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@