امریکہ نے ایران کیساتھ خیرسگالی معاہدے کی خلاف ورزی کی ہے: عالمی عدالت

نیو یارک، 26 اکتوبر، ارنا - بین الاقوامی عدالت انصاف کے صدر نے کہا ہے کہ امریکہ نے اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ موجودہ خیرسگالی معاہدے کے بعض نکات کی خلاف ورزی کا مرتکب ہوا ہے.

یہ بات 'عبدالقوی یوسف' نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس میں عالمی عدالت کی گزشتہ ایک سال میں کارکردگی پر رپورٹ پیش کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے امریکہ کے خلاف ایرانی درخواست سے متعلق کہا ہے کہ عالمی عدالت انصاف کی نظر میں امریکہ نے ایران کے ساتھ دوطرفہ خیرسگالی معاہدے کی خلاف ورزی کی ہے.
صدر عالمی عدالت انصاف نے مزید کہا کہ امریکہ کو انسانی جان بچانے کے لئے ادویات، طبی آلات اور اور اشیائے خوردنی پر سے عائد برآمدات کی پابندیاں ہٹانا ہوں گی اسی طرح جہازوں کے پرزہ جات کی برآمدات پر عائد پابندیاں بھی ہٹانا ہوں گی کیونکہ یہ بھی مسافروں کی جانوں سے کھیلنے کے مترادف ہے.
انہوں نے کہا کہ امریکہ نے خیرسگالی معاہدے کے 6 نکات کی خلاف ورزی کا مرتکب ہوا ہے اسی لئے یہ عدالت حکم دیتی ہے کہ امریکہ معاہدے پر پابندی سے عمل کرتے ہوئے فوری طور پر ایران پر سے پابندیاں اٹھائے.
جسٹس عبدالقوی یوسف نے امریکہ سے مطالبہ کیا کہ امریکہ کو یقینی دہانی کرانا ہوگا کہ وہ عالمی عدالت کو کسی بھی طرح نظرانداز نہیں کرے گا اور اسے ضمانت دینی ہوگی کے ایران کے ساتھ 1955 کے خیرسگالی معاہدے کی مستقل میں خلاف ورزی نہیں ہوگی.
انہوں نے ایران اور امریکہ پر زور دیا کہ وہ آپس کے اختلافات کو پُرامن اور مذاکرات کے ذریعے سے حل کریں.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@