چین ایران کے ساتھ اقتصادی تعاون کا سلسلہ جاری رکھے گا

بیجنگ، 24 اکتوبر، ارنا - چینی دفتر خارجہ کی ترجمان نے ایران کے خلاف امریکی ایک طرفہ پابندیوں کے نفاذ کی مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ چین ایران کے ساتھ مشترکہ اقتصادی تعاون کا سلسلہ جاری رکھے گا۔

یہ بات چینی دفتر خارجہ کے ترجمان 'ہوا چھن اینگ' نے آج بروز بدھ ارنا نمائندے کے ساتھ خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ ایران کے خلاف ایک طرف پابندیوں کے باوجود، چین ایران کے ساتھ عالمی قوانین کے مطابق مشترکہ اقتصادی تعاون کا سلسلہ جاری رکھے گا۔
چینی دفتر خارجہ کی ترجمان نے کہا کہ ایران و چین کے درمیان باہمی تعاون، درایت،منطق اور قانونی اصولوں پر مبنی ہے لہذا اس تعاون کا احترام کرنا چاہیے۔
انہوں نے ایران جوہری معاہدے سے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں کہا کہ یہ معاہدہ ایک جامع اور بین الاقوامی معاہدہ ہے جس کے ذریعے ایران کی جوہری سرگرمیوں کو خاتمہ دے سکتے ہیں لہذا سب کو مذکورہ معاہدے کے تحت کیے گئے وعدوں پر قائم رہنا چاہیے۔
چینی ترجمان نے نیویارک میں، ایران جوہری معاہدے کے وزرائے خارجہ کے اجلاس میں جاری کیے گئے بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ اس بیان کے مطابق ایران کا اقتصادی مفادات سے بہرہ مند ہونا جوہری معاہدے کے حیاتی و کلیدی نتیجے کا حصہ ہے.
انہوں نے کہا کہ چین ہر کسی قسم کی منطقی اور صحیح تجاویز کا خیرمقدم کرتے ہوئے ایران کے ساتھ باہمی اقتصادی تعاون کا سلسلہ جاری رکھے گا۔
چینی ترجمان نے کہا کہ چین، ایران جوہری معاہدے سمیت جوہری عدم پھیلاؤ معاہدے اور مشرق وسطی میں امن واستحکام برقرار رکھنے سے متعلق سب معاہدوں کی حمایت کر رہا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ چین، یورپی یونین اور دوسری متعلقہ فریقین، ایران جوہری معاہدے کے تحت اپنے جائز حقوق اور مفادات کی پاسداری کر رہے ہیں۔

**274*9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@