پاک،ایران وزرائے داخلہ کا ٹیلی فونک رابطہ/ مشترکہ سرحدوں پر دہشتگردوں کے خاتمے پر زور

تہران، 20 اکتوبر، ارنا- ایران کے وزیر داخلہ نے اپنے پاکستانی ہم منصب کے ساتھ ایک ٹیلی فونک رابطے میں دہشتگردوں کے ہاتھوں اغوا ہونے والے ایران کے سرحدی محافظوں میں ملوث عناصر کی گرفتاری کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی سکیورٹی فورسزمشترکہ سرحدوں پر دہشت گردوں کی سرگرمیوں کو روکنے کے لئے پاکستان کے ساتھ مکمل تعاون کے لئے تیار ہیں۔

'عبدالرضا رحمانی فضلی' نے پاکستان کے وزیر داخلہ 'شاہد آفریدی' کے ساتھ اس ٹیلی فونک گفتگو میں ایرانی سرحدی محافظوں کو اغوا کرنے والے دہشت گردوں کی گرفتاری کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستانی حکومت سے دوطرفہ سرحدی معاہدوں پر عمل کرنے کی توقع کی جاتی ہے ۔
ایرانی وزیر داخلہ نے اس گفتگو میں پاکستانی سرحد کے اندر دہشت گردوں کی سرگرمیوں کو روکنے کے لئے پاکستانی سکیورٹی فورسز کے ساتھ مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے۔
رحمانی فضلی نے کہا کہ ایران اور پاکستان کے باہمی تعلقات کی بنیاد، تعاون اور قیام امن برقرار رکھنے پر استوار ہے۔
انہون نے چہلم امام حسین (ع) کی مناسبت سے ایران کے راستے عراق جانے والے لاکھوں پاکستانی زائرین کے لئے سہولتوں کی فراہمی کی یقین دہانی کرائی۔
اس موقع پر پاکستانی وزیر داخلے نے کہا کہ پاکستان، مغوی ایرانی اہلکاروں کو ڈھونڈ نکالنے کے لئے اپنے ایرانی بھائیوں کی کسی بھی طرح کی مدد سے دریغ نہیں کرے گا.
آفریدی نے اس واقعے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاک،ایران تعلقات کے تناظر میں ایسی سفاکانہ کاروائیوں کی کوئی گنجائش نہیں ہے اور اس طرح کے دہشتگردانہ حملہ دونوں ممالک کی تعلقات کے درمیان منفی اثرات مرتب نہیں کرے گا۔
پاکستانی وزیر داخلے نے مزید کہا کہ پاکستانی گشتوں نے مشتبہ افراد کی نگرانی کر رہے ہیں اور ایرانی فورسز کے ساتھ اس سلسلے میں اچھے آپریشنل تعاون کی ہے.
**274*9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@