عالمی مقابلوں میں معذور ایرانی خواتین کی فتوحات کا سلسلہ جاری

تہران، 20 اکتوبر، ارنا – ایران کی معذور خواتین نے حالیہ برسوں میں مختلف ایشیائی گیمز بالخصوص اولمپیکس کے مقابلوں میں شاندار کارکردگی کا مظاہر کیا جبکہ جکارتہ کی ایشین گیمز میں ایرانی خواتین نے 44 تمغے وطن کے نام کرلئے.

تفصیلات کے مطابق، تفصیلات کے مطابق، معذور ایرانی خواتین کھیلاڑیوں نے پہلی بار 2010 میں چین میں منعقدہ پیرا ایشیائی مقابلوں میں عالمی کامیابی حاصل کرلی.
اس دوران ایران کی "راضیہ شیرمحمدی اور مرضیہ صدقی" نے تیراندازی اور ایٹھلیکس کے مقابلوں میں پہلی بار طلائی تمغے جیت لئے اور انہوں نے ثابت کردیا کہ معذور خواتین دوسرے کھیلاڑیوں کی طرح عالمی سطح پر کامیابی کے لئے بھرپور صلاحیت رکھتی ہیں.
اسلامی جمہوریہ ایران کے کھیل دستے نے جکارتہ کے 2018 پیرا ایشیائی مقابلوں میں 136 تمغوں کے ساتھ تیسری پوزیشن حاصل کرلی تھی.
معذور خواتین ایرانی شوٹرز "سارہ جوانمردی اور رقیہ شجاعی" نے جکارتہ میں منعقد ہونے والے 2018 پیرا ایشیائی مقابلوں میں طلائی تمغے کے ساتھ بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ 6 ایرانی معذور خواتین نے پہلی بار کے لئے 2018 پیرا ایشیائی شطرنج مقابلوں میں شرکت کرتے ہوئے تین طلائی، پانچ چاندی اور چار کانسی کے تمغے حاصل کرلئے.
معذور ایرانی خواتین نے شطرنج مقابلوں میں پہلی، دوسری اور تیسری پوزیشن اپنے نام کرلئے جو یہ بڑی کامیابی تھی.
خاتون ایرانی ریفریز "نادیا جعفری اور سمیرا جلیلوند" نے جکارتہ میں 2018 پیرا ایشیائی گول بال اور شطرنج مقابلوں میں فرائض سرانجام دے دی جنہوں نے ایک بار پھر معذور ایرانی خواتین کی کامیابی کی نشاندہی کی.
73 معذور خواتین ایرانی کھیلاڑی نے ایٹھلیکس، تیراندازی، گول بال، بیٹھے والی بال، ویل چیئر باسکٹ بال، بوچیا اور شطرنج مقابلوں میں اپنی ایشیائی حریفوں کے ساتھ میچوں میں 42 مختلف تمغوں کے ساتھ 6 میچوں میں نیا ریکارڈ قائم کرلیا.
یاد رہے کہ 2010 میں گوانگژو پیرا ایشیائی مقابلوں میں 24 معذور ایرانی خواتین نے شرکت کرتے ہوئے دو طلائی، تین چاندی اور 9 کانسی کے تمغے جیت لئے.
51 معذور ایرانی خواتین نے 2014 کو اینچئون کے مقابلوں میں پانچ سونے، 9 چاندی اور 9 کانسی کے تمغے اپنے نام کرلئے.
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@