ایران پر پابندیاں لگانے کی امریکی پالیسی بڑی غلطی ہے: پیوٹن

ماسکو، 19 اکتوبر، ارنا - روسی صدر نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے ہمیشہ اپنے وعدے بالخصوص جوہری معاہدے پر پابندی سے کام کیا ہے جبکہ اس کے خلاف پابندیاں لگانے کی پالیسی امریکہ کی بہت بڑی غلطی ہے.

'ولادیمیر پیوٹن' نے روسی علاقے سوچی میں ایک عالمی سمینار سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ ایران، نے جوہری معاہدے کی خلاف ورزی نہیں کی اور یورپی ممالک بھی اس کے حق میں ہیں.
انہوں نے پابندیوں کی پالیسی کو امریکہ کی بڑی غلطی قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہمارے امریکی رفقائے کار سمجھتے ہیں کہ ڈالر کے سوا دنیا میں کسی اور غیرملکی کرنسی پر بھروسہ نہیں کیا جاسکتا.
پیوٹن کا کہنا تھا کہ آج دنیا میں اکثر ممالک ڈالر کے بغیر تجارت کرنا چاہتے ہیں، یورپ بھی چاہتا ہے کہ ایران سے تجارت کرے کیونکہ اس کی نظر میں ایران، جوہری معاہدے پر من و عن عمل کررہا ہے لہذا اس نے ایران کے ساتھ عالمی سطح پر مالیاتی لین دین کے لئے مالیاتی تبادلے کے نظام، سوئیفٹ کو متعارف کرایا ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ ایران کے خلاف امریکی اقدامات مشرق وسطی میں بحرانوں کے حل کے لئے مددگار ثابت نہیں ہوسکتے. ایسے اقدامات سے نہ بحرانوں کا حل ہوگا اور نہ ہی دہشتگردی پر قابو پایا جاسکتا ہے.
روسی صدر نے شام کی صورتحال اور ایرانی کردار سے متعلق پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران ایک ذمے دار ملک اور ہمارے ایران اور شام کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں، تاہم روس، شام سے نکلنے کے لئے ایران کو مجبور نہیں کرسکتا.
انہوں نے مغربی ممالک سے مطالبہ کیا کہ وہ شام میں دہشتگردوں کی پشت پناہی اور ان کی مالی معاونت کو بند کریں.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@