ایران اور جرمنی کا جوہری معاہدے کے مکمل نفاذ پر زور

تہران، 17 اکتوبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران اور جرمنی کے اعلی سفارتکاروں نے ایک ملاقات کے دوران جوہری معاہدے کی تازہ ترین صورتحال پر تبادلہ خیال کرتے ہوئے اس عالمی معاہدے کے مکمل نفاذ کا مطالبہ کیا ہے.

یہ فیصلہ نائب ایرانی وزیر خارجہ برائے سیاسی امور 'سید عباس عراقچی' اور جرمن دفترخارجہ کے ڈائریکٹر برائے سیاسی امور 'انتیہ لیندرتسہ' نے تہران میں ایک ملاقات میں کیا گیا. اس ملاقات کے دوران دونوں فریقین نے بین الاقوامی اورعلاقائی معاملات سمیت ایران جوہری معاہدے کے نفاذ اور اس معاہدے سے امریکی علیحدگی کے بعد ایران کے خلاف امریکی غیر قانونی پابندیوں کے اثرات سے مقابلہ کرنے کی کوششوں سے متعلق بات چیت کی۔
اس موقع پر دونوں حکام نے ایران جوہری معاہدے بالخصوص ادئیگی کے میکینزم کے نئے تجاویز کے نفاذ پر تاکید کی۔
جرمنی وزارت خارجہ کے ڈائریکٹر نے کہا کہ یورپی ممالک اس مسئلے کی ضرورت اور اہمیت سے آگاہ ہیں اور گزشتہ ہفتوں کے دوران اس کے مختلف پہلووں پر مسسل کام کیا ہے۔
انہون نے مزید کہا کہ ہم ایرانی فریق سے مشوروں کے ساتھ آئندے دنوں میں مذکورہ میکینزم کو حتمی شکل دے کر ترجیحات کے مطابق اس کے بعض حصوں پر عمل درآمد آغاز کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔
اس موقع پر عراقچی نے بھی جرمنی کی عدالت کے حکم کے تحت بیلجیم کو ایک ایرانی سفارتکار کے حوالے کرنے کے فیصلے پر احتجاج کرتے ہوئے، جرمن فریق کو بتایا گیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران اپنے بین الاقوامی حقوق اور سفارتی قوانین کے مطابق اس حوالے سے کسی بھی طرح فیصلے کرنے کا حق رکھتا ہے.

**274*9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@