ایران کو تیل مارکیٹ سے الگ نہیں کیا جاسکتا: روس

ماسکو،17 اکتوبر،ارنا۔ روس نے کہا ہے کہ تیل مارکیٹ سے اسلامی جمہوریہ ایران کو الگ نہیں کیا جاسکتا اور ہماری اصولی پالیسی یہ ہے کہ تیل پیدا کرنے والے تمام ممالک کے ساتھ ایک ہو کر چلیں۔

یہ بات روس کے وزیر اقتصادی ترقی 'ماکسیم اورشکین' نے سوچی میں والدای کی 15 ویں سالانہ نشست کے فریم ورک میں منعقد ایک اقتصادی میٹنگ میں کہی۔
انہون نے ایران پر پابندیان لگانے کے نتائج سے متعلق خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر ایران کو عالمی تیل منڈی سے الگ کردیا جائے تو تیل کی قیمت 100 ڈالر فی بیرل تک پہنچ جائے گی۔
تفصیلات کے مطابق،'الیگزینڈر نوواک' نے گزشتہ دو دن پہلے روسی دارالحکومت ماسکو میں ایران کے وزیر تیل 'بیژن نامدار زنگنہ' کے ساتھ ملاقات کی.
اس موقع پر انہوں ںے کہا کہ روس چاہتا ہے کہ ایران کے ساتھ مشترکہ کوششوں کے ذریعے تیل پیدا کرنے والے ممالک کی جانب سے قوانین کے نفاذ اور مارکیٹ کو بہتر بنانے کو یقینی بنایا جائے.
روسی وزیر توانائی نے مزید کہا کہ ان کا ملک اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ مسلسل رابطے میں ہے جس کا مقصد دونوں ممالک کے درمیان تجارتی اور معاشی سرگرمیوں بالخصوص توانائی کے شعبے میں دوطرفہ تعاون کو مزید بڑھانا ہے.
واضح رہے کہ روسی وزیر توانائی نے گزشتہ ہفتہ امریکی صدر 'ڈونلڈ ٹرمپ' کے ٹوئٹر پیغامات کو عالمی تیل منڈی میں الجھن پیدا ہونے کی وجہ قرار دے کہا کہ ٹرمپ کے جذباتی اظہارات عالمی تیل منڈی کو عدم استحکام کا شکار بناکر تیل کی قیمتوں میں مزید اضافہ کا باعث بنتا ہے۔

**274*9467
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@