ظریف کا پاکستانی ہم منصب سے رابطہ، مغوی ایرانی اہلکاروں پر گفتگو

تہران، 17 اکتوبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ 'محمد جواد ظریف' نے بدھ کی شام اپنے پاکستانی ہم منصب کے ساتھ رابطہ کیا جس میں انہوں نے دہشتگردوں کے ہاتھوں اغوا ہونے والے ایرانی سرحدی اہلکاروں سے متعلق گفتگو کی.

تفصیلات کے مطابق، 'محمد جواد ظریف' نے پاکستانی ہم منصب کے ساتھ پاک ایران سرحد کے قریب میرجاوہ کے مقام پر گزشتہ روز اغوا ہونے والے ایرانی بارڈر گارڈز سے متعلق تازہ ترین صورتحال پر تبادلہ خیال کیا.
انہوں نے پاک ایران سرحد کی سلامتی اور اس پر نگرانی میں اضافے کا مطالبہ کرتے ہوئے حکومت پاکستان پر زور دیا کہ مغوی ایرانی اہلکاروں کی بحافظت بازیابی اور اس واقعے میں ملوث دہشتگردوں کی فوری گرفتاری کے لئے اقدامات اٹھائے
اس موقع پر پاکستانی وزیر خارجہ 'شاہ محمود قریشی' نے ایرانی سرحدی اہلکاروں کے اغوا کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بدقسمتی سے دہشتگردوں نے انسانیت کے خلاف قدم اٹھاتے ہوئے ایسی سفاکانہ کاروائی کی ہے.
انہوں نے اس بات کی یقین دہانی کرائی ہے کہ حکومت پاکستان اپنے تمام وسائل اور ذرائع کا استعمال کرتے ہوئے ایرانی اہلکاروں کی بازیابی اور اس غیرانسانی فعل میں ملوث دہشتگردوں کی گرفتاری کے لئے کسی بھی مدد سے دریغ نہیں کرے گی.
پاکستانی وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ دہشتگرد عناصر برادر اور ہمسایہ ممالک ایران اور پاکستان بالخصوص دونوں عوام کے مشترکہ دشمن ہیں جن کا مقصد ہی یہی ہے کہ ہمارے دوستانہ اور قریبی تعلقات کو متاثر کریں.
دریں اثناء پاکستانی دفترخارجہ نے بھی اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستانی وزیر خارجہ سے ان کے ایرانی ہم منصب نے ٹیلی فونک رابطہ کیا جس میں ایرانی بارڈر گارڈز کے اغوا سے سرحد پر پیدا ہونے والی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا.
بیان کے مطابق، پاکستانی وزیر خارجہ نے اس واقعے پر سخت تشویش کا اظہار کیا.
انہوں نے بتایا کہ مغوی ایرانی اہلکاروں کی تلاش کے لئے پاکستان کے سیکورٹی ادارے اقدامات کررہے ہیں.
شاہ محمود نے کہا کہ پاکستان کی جانب سے ایرانی ملٹری اور خفیہ اداروں سے بھی تعاون ہے.
انہوں ںے مزید کہا کہ دونوں ممالک کے ملٹری آپریشن کے سربراہوں نے بھی ہاٹ لائن پر رابطہ کیا ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@