نئی امریکی پابندیاں عالمی قوانین کی کھلی توہیں ہیں: ایرانی ترجمان

تہران، 17 اکتوبر، ارنا - ایرانی دفترخارجہ کے ترجمان نے امریکہ محکمہ خزانہ کی جانب سے پابندیوں کی نئی لسٹ کو ایرانی عوام کے خلاف نفسیاتی جنگ کا حصہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایسے اقدامات عالمی قوانین کی کھلی پامالی ہیں.

یہ بات 'بہرام قاسمی' نے بدھ کے روز ایرانی کمپنیوں کے خلاف امریکہ محکمہ خزانہ کی جانب سے پابندیوں کی نئی لسٹ پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے مزید کہا کہ نئی امریکی پابندیاں ایرانی قوم کے خلاف امریکی حکومت کی دشمنی ہیں.
قاسمی نے کہا کہ امریکی انتظامیہ ایرانی عوام کی نام نہاد حمایت کا دعویٰ کرتی رہتی ہے جبکہ اس نے آئے روز ایران کے عالمی برادری کے ساتھ معاشی تعلقات میں نہ صرف رکاوٹیں کھڑی کررہی ہے بلکہ ایران کے خلاف عالمی قوانین اور انسانی حقوق کی خلاف ورزی کا بھی مرتکب ہے.
ترجمان نے مزید کہا کہ جوہری معاہدے سے امریکہ کی غیرقانونی علیحدگی کے باوجود اسلامی جمہوریہ ایران دنیا کے مختلف ممالک نے خوش اسلوبی کے ساتھ اس معاہدے سے متعلق اپنے اقدامات پر کام کیا ہے جبکہ امریکہ نے اپنا رویہ نہیں بدلا بلکہ اس نے ایرانی قوم کے مفادات اور عالمی قوانین کے خلاف اقدامات اٹھاتے ہوئے عالم امن کو داؤ پر لگا دیا ہے.
یہ بات قابل ذکر ہے کہ امریکی محکمہ خزانہ نے نام نہاد دہشتگردی کی وجوہات پر ایرانی بینک ملت، مہر اقتصاد، سینا، پارسیان، بہمن گروپ آف انڈسٹری، ایران کی ٹریکٹر مینوفیکچرنگ کمپنی اور اصفہان اسٹیل کو پابندیوں کی نئی لسٹ میں ڈال دیا ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@