خاشقجی کا انجام، محمد بن سلمان کی داعش سے شباہت کا منہ بولتا ثبوت

تہران، 24 اکتوبر، ارنا - سعودی صحافی جمال خاشقجی کے لرزہ خیز قتل کے چند دن گزر جانے کے بعد پیدا ہونے والے اثرات سے سعودی ولیعھد 'محمد بن سلمان' اور ان کے والد شاہ سلمان کے لئے تاریخی رسوائی رقم ہوئی ہے جسے چھپانے کے لئے وہ ہاتھ پیر ماررہے ہیں.

آل سعود کے ہاتھوں نامور صحافی 'جمال خاشقجی' کا قتل محمد بن سلمان اور داعش کے مماثلت کے لئے ایک واضح ثبوت ہے.
بہر حال ریاض کی سلطنت عالمی دباو کو برداشت نہ کرسکی اور بلاخر اس نے اعتراف کیا کہ استنبول میں موجود سعودی قونصل خانے میں آل سعود کے نامور نقاد 'خاشقجی' کے قتل سے متعلق دنیا میں سامنے آنے والی خبریں جھوٹ نہیں اس کے باوجود بن سلمان اب بھی اس ہولناک واقعے میں اپنے اور آل سعود کے غیرانسانی کردار کو چھپانے کے لئے کوشاں ہے.
استنبول میں سعودی قونصل خانے میں جمال قاشقجی کے قتل کی وجوہات پر ہزاروں سوال کا جواب کے لئے سنجیدہ اور شفاف تحقیقات ہونی چاہئیں.
سعودیوں کی جانب سے جمال کے سفاکانہ قتل سے یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ سعودی ولیعہد بن سلمان اور عالمی دہشتگرد تنظیم 'داعش' کے سرغنہ ' ابوبکر البغدادی' کے درمیان کوئی فرق نہیں ہے.
دو اکتوبر کو سعودی عرب سے خودساختہ جلاوطنی اختیار کرنے والے جمال خاشقجی ترکی میں استنبول میں قائم سعودی قونصل خانے میں داخل ہوئے جہاں سے وہ کبھی باہر واپس نہیں آئے، ان کی گمشدگی کے بعد بین الاقوامی سطح پر شدید رد عمل سامنے آیا اور اس میں مزید تیزی بھی آئی.
چند دن گزرنے کے بعد معلوم ہوا کہ سعودی اہلکاروں نے ہی قونصل خانے کی عمارت میں جمال خاشقجی کو بے دردی سے قتل کیا اور ان کی نعش کو ٹکڑے ٹکڑے کیا جبکہ یہ سب جانتے ہیں کہ یہ داعش کا ہی طریقہ ہے.
آل سعود کی جانب سے یمن پر جارحیت، داعش دہشتگردوں کی مالی معاونت اور ہتھیاروں کی فراہمی اور مشرقی وسطی میں افراتفری کو بڑھانے کے لئے سازشیں بنانا، داعش اور محمد بن سلمان کی مماثلت کے لئے ناقابل تردید دستاویز ہیں.
محمد بن سلمان جسے دنیا داعش کے روپ میں ولیعہد اور سیاستدان کی شکل میں دیکھتی ہے، آج عالمی سطح پر شدید دباؤ میں ہے لہذا اس کی یہ کوشش ہوگی کہ جمال خاشقجی کے قتل سے آل سعود کو ہونے والی تاریخی رسوائی کو چھپانے کے لئے تیل اور تیل کی آمدنی کا استعمال کرے. تاہم تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ طاقت کے نشے میں دھت موجودہ سعودی ولیعہد کے دن گنے جاچکے ہیں اور اس کے پاس طاقت چھوڑنے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں.
9410*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@