انسانی حقوق کونسل کے اقدامات امتیازی اور ان کا مقصد سیاسی ہے: ایران

نیو یارک، 17 اکتوبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے اقدامات کو امتیازی اور ان کے مقاصد کو سیاسی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ پابندیوں سے ایرانی قوم کو درپیش مسائل پر عالمی ادارے کی عدم توجہ ناقابل قبول ہے.

تفصیلات کے مطابق، اقوام متحدہ کی تیسری کمیٹی کے اجلاس میں شریک ایرانی نمائندے 'محمد حسنی نژاد' نے عوام پر پابندیوں کے منفی اثرات سے متعلق انسانی حقوق کونسل کی عدم توجہ کو تنقید کا نشانہ بنایا.
انہوں نے مزید کہا کہ انسانی حقوق کونسل کے اقدامات دہرے معیار اور سیاسی مقاصد پر مشتمل ہیں.
ایرانی نمائندے نے کہا کہ انسانی حقوق کونسل نے ایرانی عوام کے معاشی اور سماجی حقوق پر لگائی جانے والی پابندیوں پر کوئی توجہ نہیں دی.
اس موقع پر انہوں نے ایران میں انسانی حقوق کی صورتحال سے متعلق سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ کی رپورٹ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ رپورٹ حقائق کے خلاف اور اس میں مخصوص سیاسی ایجنڈے شامل ہیں.
انہوں نے خبردار کیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف مسلسل امتیازی سلوک اور بے بنیاد رپورٹس بنانے سے نہ صرف دہرے معیار کے اقدامات بے نقاب ہورہے ہیں بلکہ اس سے اقوام متحدہ کے انسانی حقوق سے متعلق اقدامات پر سوالات اٹھ رہے ہیں.
ایرانی نمائندے نے سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ کی رپورٹ کو غیرتعمیری قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ کیسی رپورٹ ہے جس میں ایران کے خلاف غیرمنصفانہ بات تو کی گئی ہے مگر ایرانی عوام کے خلاف امریکہ کی غیرقانونی پابندیوں پر بات نہیں کی گئی.
انہوں ںے اس بات پر زور دیا کہ انسانی حقوق سے متعلق تحفظات کو دور کرنے کے لئے باہمی احترام اور بات چیت بہترین طریقہ ہے.
محمد حسنی نژاد نے مزید کہا کہ عالمی سطح پر انسانی حقوق کی ساکھ کو برقرار رکھنے کے لئے باہمی احترام پر مبنی مذاکرات کی ضرورت ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@