ایران جوہری معاہدے کی علیحدگی سے کچھ حاصل نہیں ہوگا: فرانسیسی صدر

تہران،14 اکتوبر،ارنا۔ فرانس کے صدر نے کہا کہ ایران جوہری معاہدے کی علیحدگی سے کچھ حاصل نہیں ہوگا۔

یہ بات فرانس کے صدر'ایمانوئیل میکرون' نے فرانس کے بین الاقوامی ریڈیو کے ساتھ انٹرویو دیتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ ایران جوہری معاہدے کے سلسلے میں یورپ اور امریکہ کی نقطہ نظر ایک دوسرے سے مختلف ہے۔
فرانس کے صدر نے کہا کہ امریکہ میں ٹرمپ کے آنے بعد، ہماری کوششیں ایران جوہری معاہدے کے تحفظ کے لئے مسلسل جاری ہے۔
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ہماری ساری جد و جہد یہ ہے کہ ایرانی حکومت جوہری معاہدے سے الگ نہ ہو جائے کیونکہ اگر ایسا ہوجائے تو ایران کی جوہری سرگرمیوں کی نگرانی ممکن نہیں ہوگا۔
فرانس کے صدر نے کہا کہ ایران جوہری معاہدے سے نکلنا، بالکل موثر ثابت نہیں ہوگا اور اس معاہدے کی علیحدگی سے خطے اور مشرقی وسطی کو خطرات لاحق ہوگا۔
انہون نے کہا کہ میں نے اپنے صدرات کے آغاز ہی سے اس بات پر زور دیا کہ صرف ایران پر سیاسی دباؤ ڈالنے کے ذریعے اس ملک کا سامنا کر سکتے ہیں اور ایران جوہری معاہدے کی علیحدگی سے کچھ حاصل نہیں ہوگا۔
فرانس کے صدر نے کہا کہ ایران کے سامنے فرانس کی حکمت عملی چار اصولوں پر استوار ہے۔ پہلا، ایران جوہری معاہدے کا تحفظ، دوسرا، 2015کے بعد ایران کی جوہری سرگرمیوں کی نگرانی، تیسرا، ایران کی میزائیل سرگرمیوں کی نگرانی اور چوتھا، مشرق وسطی میں ایران کے فوجی اثر و رسوخ کم کرنے کا ہے۔


9467*
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@