زائرین کے مسائل کے حل کیلئے ایران،پاکستان اور عراق کی مشترکہ رابطہ کمیٹی کا قیام اہم قرار

اسلام آباد، 13 اکتوبر، ارنا - پاکستانی سیاسی رہنما اور مجلس وحدت مسلمین (MWM) کے سیکریٹری جنرل نے اسلامی جمہوریہ ایران، پاکستان اور عراق کی حکومتوں سے مطالبہ کیا ہے کہ زائرین کے مسائل کے حل کے لئے مشترکہ رابطہ کمیٹی کا قیام عمل میں لایا جائے.

یہ بات علامہ 'راجہ ناصر عباس جعفری' نے ہفتہ کے روز اسلام آباد میں ارنا نیوز ایجنسی کے نمائندے کو خصوصی انٹریو دیتے ہوئے کہی.
اس موقع پر انہوں نے مزید کہا کہ زائرین کے مسائل صرف محرم الحرام کے پہلے عشرے یا چہلم کے ایام تک محدود نہیں بلکہ پاکستانی شہریوں کے ایران اور عراق کی زیارتوں کے سفر کا سلسلہ پورے سال جاری رہتا ہے.
انہوں نے یہ تجویز دی ہے کہ ایران، پاکستان اور عراق کی خارجہ، داخلہ اور مذہبی امور کی وزارتوں پر مشتمل مشترکہ رابطہ اور تعاون کمیٹی کی تشکیل ہو جس کا مقصد زائرین کو درپیش مسائل کے حل کے لئے بہتر اور وقت کے مطابق اقدامات اٹھائے جائیں.
علامہ راجا ناصر عباس نے چہلم امام حسین (ع) کے سالانہ عظیم پیدل مارچ کو شیعہ سنی کی وحدت کی منفرد علامت قرار دیتے ہوئے کہا کہ چہلم مارچ سے عالم اسلام میں باہمی اتحاد مزید مضبوط ہوگا جس سے امت مسلمہ کے دشمنوں میں مایوسی پیدا ہوگی.
انہوں نے پاک ایران سرحد تفتان پر پاکستانی زائرین کی پذیرائی کے لئے حکومت ایران کی منفرد انتظامات بالخصوص پاکستانی زائرین سے متعلق قائد اسلامی انقلاب کی خصوصہ توجہ کا شکریہ ادا کیا.
علامہ جعفری نے مزید کہا کہ ایران اور پاکستان کی ہوائی کمپنیاں اس موقع پر مقدس مقامات کے لئے پاکستان سے براہ راست پروازیں چلائیں جس سے ان کا مالی فائدہ بھی ہوگا اور زائرین کو بھی سہولت فراہم ہوگی.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@