اعلی یورپی حکام کا انڈونیشیا میں ایران جوہری معاہدے پر تبادلہ خیال

کوالالمپور، 13 اکتوبر، ارنا – یورپی ممالک کے سنیئر حکام نے انڈونیشیا میں ہونے والے عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) کے اجلاس کے موقع پر ایران جوہری معاہدے کی تازہ ترین صورتحال پر تبادلہ خیال کیا.

تفصیلات کے مطابق، انڈونیشیا کے جزیرے بالی میں آئی ایم ایف اجلاس کے موقع پر یورپی یونین کے بعض حکام نے جوہری معاہدہ اور ایران مخالف امریکی پابندیوں کا جائزہ لیا.

اس سے پہلے یورپی حکام نے اعلان کیا تھا کہ

عالمی جریدے بلوم برگ کے مطابق، امریکہ کی ایران جوہری معاہدے سے علیحدگی کے بعد یورپ، چین اور روس نے یہ عزم کیا ہے کہ وہ ایران کے ساتھ باہمی تجارت کو مزید فروغ دیں.

اس منصوبے کے تحت فرانس اور جرمنی کی قیادت میں یورپ کی جانب سے ایران کے ساتھ تجارتی سرگرمیوں کو جاری رکھنے کا عمل کا آغاز کیا جائے گا جبکہ دوسری جانب امریکہ نے دھمکی دی ہے کہ وہ ایران سے لین دین کرنے والی کمپنیوں پر پابندی عائد کرے گا.

بلوم برگ نے مزید کہا کہ آئندہ مہینے سے امریکہ کی جانب سے ایران پر تیل پابندیاں لگائے جانے کی صورت میں یورپ اپنے اقتصادی مفادات کے تحفظ کے لئے موثر راستہ بنارہا ہے تاہم اس حوالے سے مزید تفصیلات سامنے نہیں آئیں.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@