پاکستان کا ایران کیساتھ کثیرالجہتی تعلقات کو مزید بڑھانے پر زور

اسلام آباد، 1 اکتوبر، ارنا - پاکستان کے وزیر مملکت برائے داخلہ نے کہا ہے کہ ان کا ملک اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ مشترکہ روابط کی توسیع کے لئے پرعزم ہے.

اسلام آباد میں ارنا نیوز ایجنسی کے نمائندے سے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے 'شہریار خان آفریدی' نے کہا ہے کہ پاکستان کی نئی حکومت زائرین کو مختلف سہولت فراہم کرنے کے لئے کوئی بھی کوشش سے دریغ نہیں کرے گی.
انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ایران کے عوام کے درمیان دیرینہ اور مستحکم تعلقات قائم ہے جس کو مزید تقویت دینے کی ضرورت ہے.
انہوں نے کہا کہ ایران ان پہلے ممالک میں شامل تھے جس نے پاکستان کو 1947 میں ایک آزاد ریاست کے طور پر تسلیم کیا جس کا اہم اب بھی قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں ۔ گذشتہ 70 سالوں میں دونوں ممالک ایک دوسرے کے غم اور خوشی میں شریک ہیں.
شہریار خان افریدی نے کہا جب نئی حکومت کی طرف سے وزیر داخلہ کا منصب سنبھالا تو سب سے پہلا کام تفتان کے سرحدی شہر کا دورہ تھا جس کا مقصد پاکستانی زائرین کی مشکلات جاننا اور اسے ختم کرنا تھا.
انہوں نے دین اسلام میں ماہ محرم کی اہمیت بتاتے ہوئے کہا کہ امام حسین اور ان کے جانثاروں نے عاشور کے دن میں بڑی قربانیاں دی ہیں جس کی وجہ سے ہمیں ان کے نقش قدم پر چلنا چاہیئے.
پاکستانی وزیر داخلہ نے امت اسلام میں مختلف دشمن عناصر کی سازشوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہمیں ان سازشوں کو ہوشیاری کے ساتھ ناکام بنانا چاہیئے.
ایران کے اہواز شہر میں حالیہ دہشت گردی کے واقعہ کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم اس سانحہ کی سختی سے مزمت کرتے ہیں یقینا یہ حملہ پوری انسانیت پر حملہ تھا.
پاکستان کے وزیر داخلہ نے کہا ہم اس مشکل ایام میں ایران کے بہن بہائیوں کے ساتھ ان کے دکھ اور درد میں شریک ہیں.
انہوں نے امید ظاہر کی کہ ایران اور پاکستان کی کاوشوں سے دہشت گردی اور انتہاپسندی خطے میں جلد ہی روٹ سے ختم ہو.
1*271**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@