تہران کا سہ فریقی اجلاس شام میں قیام امن کیلئے مددگار ثابت ہوگا: ایران

تہران، 3 ستمبر، ارنا - ترجمان ایرانی دفترخارجہ نے کہا ہے کہ تہران میں ایران، روس اور ترکی کے درمیان آئندہ ہونے والے سہ فریقی اجلاس سے شام میں قیام امن اور مسائل کے سیاسی حل کے لئے مدد ملے گی.

یہ بات 'بہرام قاسمی' نے پیر کے روز تہران میں اپنی ہفتہ وار پریس بریفنگ میں ملکی اور غیرملکی صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے مزید کہا کہ تہران کے سہ فریقی اجلاس میں ایران، روس اور ترکی کے سربراہان مملکت شرکت کریں گے.
قاسمی نے کہا کہ شامی مسائل کے حل کے لئے سیاسی حل سب سے بہترین طریقہ ہے.
انہوں نے ایرانی وزیر خارجہ کی جانب سے دورہ شام کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ظریف آج شامی صدر، وزیر اعظم اور اپنے ہم منصب کے ساتھ ملاقاتیں کریں گے.
ایرانی محکمہ خارجہ کے ترجمان نے شامی علاقے ادلب میں شامی فوج اور ایران کی مدد پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ شامی حکومت دہشتگردوں کے مکمل خاتمے کے لئے کوشش کرکے اور ہماری فوجی مدد جاری رکھے گی.
تہران کے آئندہ سربراہی اجلاس میں سوچی اور آستانہ میں ہونے والے گزشتہ نشستوں کے نتائج پر غور کیا جائے گا جبکہ اسی دوران شامی صوبے ادلب میں دہشتگردوں کے خلاف اقدامات سے متعلق بھی گفتگو ہوگی.
توقع کی جارہی ہے کہ تہران اجلاس میں ترک اور روسی وزرائے خارجہ بھی شریک ہوں گے.
یاد رہے کہ گزشتہ دو سال پہلے شام کے بحران کے حل کے لئے ایران، روس اور ترکی نے سہ فریقی تعاون کے عمل کا آغاز کیا جسے آستانہ عمل کا عنوان دیا گیا.
9393*274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@