اوآنا تنظیم خطی اور عالمی فورمز میں میں اپنا کردار بڑھائے: ارنا چیف

تہران، 3 ستمبر، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کی سرکاری نیوز ایجنسی (IRNA) کے مینجینگ ڈائریکٹر نے ایشیا پیسفک نیوز ایجنسیوں کی تنظیم (OANA) کے رکن ممالک پر زور دیا ہے کہ وہ علاقائی اور بین الاقوامی سطح پر اجتماعی سرگرمیوں میں اضافہ کریں.

یہ بات ''سید ضیاء ہاشمی'' نے پیر کے روز تہران میں ایشیا پیسفک نیوز ایجنسیوں کی تنظیم (OANA) کے 43ویں ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس کی افتتاحی نشست سے خطاب کرتے ہوئے کہی.
یہ اجلاس ارنا نیوز ایجنسی کی میزبانی میں ہورہا ہے.
ارنا چیف نے مزید کہا کہ اوآنا تنظیم ایک مستقل ادارہ ہے اور ثقافتی سرگرمیاں اس کی بنیادی ترجیح ہے، اوآنا کی کوشش ہے کہ اس کے اراکین کی مدد سے ثقافتی اور انسانی خدمات سے متعلق سرگرمیوں کو فروغ دے.
انہوں نے کہا کہ تمام رکن خبررساں اداروں کی مدد سے میڈیا کی دنیا میں رونما ہونے والی جدید فضا میں اور ایک نئے دستور کے ساتھ ترجیحی اقدامات اٹھائیں اور جدید ٹیکنالوجی کے ساتھ خطے اور عالمی سطح پر مشترکہ سرگرمیوں میں بھی اضافہ کریں گے.
سید ضیاء ہاشمی نے اس امید کا اظہار کیا کہ قریب مستقبل میں اوآنا تنظیم میں ہونے والی تبدیلی کے ثمرات خطے اور بین الاقوامی سطح پر نظر آئیں گے، اوآنا جیسی تنظیم دنیا کو اقوام کی اصل آواز بالخصوص مظلوم قوموں کی سطح طرح ترجمانی کرنے کی صلاحیت رکھتی ہیں.
انہوں نے مزید کہا کہ اوآنا کی مدد سے حریت پسند اور آزادی کے حقدار عوام کی آواز کو دنیا تک پہنچائیں گے اور باہمی اقدامات سے دنیا میں ناانصافی کا مقابلہ بھی کریں گے.
ارنا نیوز ایجنسی کے مینجنیگ ڈائریکٹر کا کہنا تھا کہ 180 سال پہلے دنیا کی نامور نیوز ایجنسیوں نے اپنے کا آغاز کردیا تھا، ارنا نیوز بھی ان پرانی اور تجربہ کار نیوز ایجنسیوں میں شامل ہے جس کی تشکیل سے 84 سال گزر گئے.
انہوں نے مزید کہا کہ دنیا کے مختلف علاقوں میں خبررساں اداروں نے خبر بنانے اور اس کی نشر میں بے پناہ اقدامات کئے جبکہ ان اداروں نے علاقائی اور عالمی سطح پر پیشہ وارانہ سرگرمیوں کو جاری رکھتا ہے تاہم علاقائی ممالک کئی سالوں سے عدم توازن اور ذرائع ابلاغ کے شعبے میں بعض مشکلات کا سامنا کررہے ہیں جس کی وجہ سے آج یکطرفہ معلومات کی فراہمی کی جارہی ہیں.
ہاشمی نے کہا کہ اوآنا تنظیم کے رکن ممالک دنیا کی زیادہ تری آبادی رکھتے ہیں، اراکین میں تعاون کے لئے سنہری مواقع اور قابل قدر صلاحیتیں موجود ہیں مگر ہمیں اس بات کا اعتراف کرنا پڑے گا کہ ہم نے اپنی صلاحیتوں کا موثر انداز میں فائدہ نہیں اٹھایا اور اوآنا تنظیم کی تشکیل کو چھ دہائی گزرنے کے بعد بھی یہ ادارہ خطی اور عالمی سطح پر اپنا موثر کردار کو بہتر انداز میں اجاگر نہیں کرسکا.
انہوں ںے مزید کہا کہ ہم بھی اپنے حصہ کی ذمے داریاں ادا کرتے رہیں گے جس کا مقصد جدید ٹیکنالوجی اور وسائل کے ذریعے اوآنا تنظیم کی علاقائی اور عالمی حیثیت میں اضافہ کرنا ہے.
ارنا نیوز چیف نے کہا کہ آج بعض طاقتیں معلومات اور ذرائع ابلاغ کا غلط استعمال کررہی ہیں بلکہ ان طاقتوں نے ذرائع ابلاغ پر اپنی گرفت مضبوط کی ہے جبکہ ایسی صورتحال عسکری اور سیاسی سرگرمیوں کی وجہ سے رونما ہوتی ہے.
انہوں نے مزید کہا کہ دنیا میں حریت پسندی کی حمایت، انسداد سامراجیت اور سامراج مخالف مقاصد کے حصول کا راستہ لمبا ہے اور ہمیں مزید اقدامات کرنا ہوں گے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@