قطر ایران کیساتھ میڈیا شعبے میں باہمی تعاون کو مزید فروغ دینے کیلئے پُرعزم

تہران، 3 ستمبر، ارنا - قطر کے قومی خبررساں ادارے کے سربراہ نے کہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران اور قطر کے درمیان میڈیا شعبے میں 40 سالہ تعلقات قائم ہیں اور ہم ان تعاون کو مزید بڑھانے کے لئے پُرعزم ہیں.

یہ بات 'یوسف ابراہیم المالکی' نے تہران میں ایران کی سرکاری نیوز ایجنسی (IRNA) کے مینجینگ ڈائریکٹر 'سید ضیاء ہاشمی' کے ساتھ ایک ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی.
اس موقع پر قطری ادارے کے سربراہ نے اپنے وفد کے ممبران کے ساتھ ارنا نیوز ہیڈآفس کے مختلف شعبوں کا دورہ کیا اور خبر اور تصاویر سے متعلق سرگرمیوں کو قریب سے دیکھا.
ابراہیم المالکی اوآنا تنظیم کے 43ویں اجلاس میں شرکت کے لئے تہران کے دورے پر ہیں.
انہوں نے اوآنا تنظیم کے اجلاس کی میزبانی کرنے پر ارنا نیوز ایجنسی کی کوششوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا کہ اوآنا اجلاس میں قطری وفد کی شرکت سے دونوں ممالک کے تعلقات کو مزید فروغ دینے میں مدد ملے گی.
قطری نیوز ایجنسی کے سربراہ نے مزید کہا کہ ایران اور قطر کے درمیان گزشتہ 40 سالوں سے میڈیا کے شعبے میں تعلقات قائم ہیں، دوحہ میں ارنا بیورو آفس سب سے اہم اور فعال دفاتر میں شمار ہورتا ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ دونوں ممالک کے درمیان میڈیا کے شعبے میں مشترکہ سرگرمیوں کو مزید فروغ دیں.
انہوں نے کہا کہ حالات اور موجودہ صورتحال کے پیش نظر ہم سمجھتے ہیں کہ ارنا اور قطری نیوز ایجنسیوں کے درمیان باہمی تعلقات کی توسیع ناگزیر ہے.
ابراہم المالکی نے مزید کہا کہ ارنا اور قطری اداروں نے سال 2000 میں تعاون کے معاہدے پر دستخط کئے تھے تاہم قطر اس معاہدے کی تجدید اور اسے مزید فعال بنانے کا خواہاں ہے.
ارنا نیوز ایجنسی کی میزبانی میں آج 3 ستمبر سے ایشیا پیسفک نیوز ایجنسیوں کی تنظیم کے ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس کا انعقاد کیا جائے گا.
35 ممالک کے 44 خبررساں ادارے اس وقت اوآنا تنظیم کے رکن ہیں. اس تنظیم کو اقوام متحدہ کے ادارہ یونیسکو کی حمایت کے ساتھ 1961 کو قائم کیا گیا تھا جس کا مقصد علاقائی ممالک کی نیوز ایجنسیوں کے درمیان تعاون اور ذرائع ابلاغ کی فراہمی کو آسان بنانا ہے.
ارنا نیوز ایجنسی 1997 سے 2000 تک اس تنظیم کی صدر رہی. اس کے بعد ارنا سال 2016 میں اوآنا کی نائب صدر بھی رہ چکی ہے.
ارنا نیوز ایجنسی اس وقتOANA کی ممبر بورد آف ایگزیکٹو اور تنظم کی بانیوں میں سے ہے.
274**
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@