پیجو اور رینالٹ کمپنیوں نے ایران سے نکلنے کا باضابطہ فیصلہ نہیں کیا

تہران، 30 جون، ارنا - ایرانی وزیر صنعت و تجارت نے کہا ہے کہ کاریں بنانے والی فرانسیسی کمپنیاں پیجو اور رینالٹ نے ایران سے نکلنے کا کوئی با ضابط اعلان نہیں کیا ہے.

''محمد شریعتمداری'' نے ہفتہ کے روز تہران میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مزید کہا کہ پیجو اور رینالٹ نے ایران میں سرمایہ کاری کی ہوئی ہیں اور ان کے یہاں اقتصادی مفادات ہیں لہذا انھوں نے ایران سے نکلنے کا کوئی باضابطہ فیصلہ نہیں کیا ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ پیجو کمپنی نے ایران میں گاڑی بنانے والی سرکاری کمپنی ایران خودرو کے ساتھ مل کر مشترکہ کمپنی IKAP پر 30 کروڑ ڈالر سرمایہ کاری کی ہے اور اس کے علاوہ 20 کروڑ ڈالر بھی اپنے ساتھ ایران لائی ہے.

ایرانی وزیر صنعت و تجارت نے کہا کہ پیجو ایران میں سرمایہ کاری کرنے میں دلچسپی رکھتی ہے، اس کمپنی کے امریکہ کے ساتھ اقتصادی تعلقات محدود ہیں تاہم ایران کے ساتھ کام کرنے شاید پیجو کشمکش کا شکار ہو لیکن اب تک ان کمپنیوں کے ایران سے نکلنے کا کوئی حتمی فیصلہ سامنے نہیں آیا.

انہوں ںے مزید کہا کہ غیرملکی کمپنیوں کی علیحدگی کی صورت میں ہم ان کی جگہ دوسری کمپنیوں کے حوالے سے بھی غور کررہے ہیں.

محمد شریعتمداری نے کہا کہ ایران کی آٹو صنعت امریکی پابندیوں کا شکار ہونے والی پہلی صنعت ہے کیونکہ اس کے ذریعے ایران میں نوجوان نسل کے لئے متعدد روزگار کے مواقع فراہم ہورہے تھے مگر ہم یقین دہانی کراتے ہیں کہ ایرانی ماہرین اور انجینئرز کی بدولت پابندیوں کی مشکلات کو پیچھے چھوڑدیں گے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@