ایران کیساتھ تجارتی لین دین کو کم نہیں کریں گے: ترکی

تہران، 30 جون، ارنا - ترک وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ان کا ملک اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ باہمی تجارتی سرگرمیوں میں کمی نہیں لائے گا اور نہ ہی اس حوالے سے امریکی دباؤ سے متاثر ہوگا.

یاد رہے کہ امریکہ نے حالیہ دنوں دنیا کے تمام ممالک سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ نومبر تک ایران کے ساتھ اپنے اقتصادی تعلقات کو ختم کرنے کے علاوہ ایرانی تیل برآمدات کو بند کریں.

رائٹرز نیوز ایجنسی کے مطابق، ترک وزیر خارجہ 'مولود چاووش اوغلو' کا کہنا تھا کہ اگر امریکی اقدامات کا مقصد خطے میں قیام امن و استحکام کو مضبوط بنانے ہے تو ہم ان کے ساتھ ہیں مگر یہ ضروری نہیں کہ ترکی امریکہ کے ہر مطالبے کا ساتھ دے.

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران ہمارا اہم پڑوسی ملک ہے جس کے ساتھ ہمارے اچھے تجارتی تعلقات ہیں لہذا ہم دوسرے ممالک کی ایماء پر ایران کے ساتھ تجارتی تعاون کو کم نہیں کریں گے.

یہ بات قابل ذکر ہے کہ ترکی کی توانائی اتھارٹی کے مطابق ترکی رواں سال کے پہلے چار مہینوں میں اپنی 55 فیصد خام تیل کی ضروریات کو ایران کے ذریعے پورا کیا ہے.

سرکاری اعداد و شمار کے مطابق، ترکی نے اسی دوران ایران سے 30 لاکھ بیرل خام تیل درآمد کیا ہے.

ترک صدر رجب طیب اردوان نے اس سے پہلے بتایا تھا کہ ان کا ملک ایران کے ساتھ باہمی تجارتی حجم کو 10 ارب ڈالر سے 30 ارب ڈالر تک بڑھانے کا خواہاں ہے.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@