عالمی سلامتی کو ناجائز صہیونی ریاست سے خطرہ لاحق ہے: ایرانی وزیردفاع

تہران، 29 جون، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر دفاع اور لاجسٹک نے کہا ہے کہ ناجائز صہیونی ریاست کے پاس دنیا کے سب سے مہلک جوہری ھتھیار ہیں جس سے عالم امن و سلامتی کو شدید خطرات لاحق ہیں.

یہ بات بریگیڈیر جنرل ''امیر حاتمی'' نے قومی یوم انسداد کیمیائی اور حیاتیاتی ھتھیار کی مناسبت سے اپنے خصوصی پیغام میں کہی.

انہوں نے اس بات پر انتباہ کیا ہے کہ مغربی ایشیائی خطے میں کیمیائی ھتھیاروں کے ذریعے دہشتگردی کی نئی لہر پیدا ہورہی ہے اور اس حوالے سے ناجائز صہیونی ریاست دنیا کے لئے سب سے بڑا خطرہ ہے کیونکہ اس کے باس کیمیائی اور حیاتیاتی سمیت مہلک جوہری ھتھیاروں کا سب سے بڑا ذخیرہ ہے.

ایرانی وزیر دفاع نے مزید کہا کہ ایرانی قوم کے خلاف صدام کی سفاکانہ کیمیائی کاروائیوں کو تین دہائیاں گزرنے کے بعد آج بھی امریکہ سمیت دنیا کی سامراج قوتوں نے مہلک ھتھیاروں کے استعمال کرنے والوں کی حمایت کا سلسلہ جاری رکھا ہے.

انہوں نے کہا کہ 1987 میں صدام نے ایرانی علاقے سردشت کے نہتے عوام کو کیمیائی حملوں کا نشانہ بنایا، اس واقعے میں سینکڑوں ایرانی شہری شہید جبکہ ہزاروں کی تعداد میں زخمی ہوگئے مگر امریکہ جو اپنے آپ کو نام نہاد انسانی حقوق کا علمبردار سمجھتا ہے، اس واقعے پر خاموش رہا اور آج وہ ایسے واقعات میں برابر کے شریک بھی ہے.

بریگیڈیر جنرل امیر حاتمی نے کہا کہ 11 سال گزر گئے مگر امریکہ نے کیمیائی حملوں کے خاتمے سے متعلق عالمی معاہدے پر عمل نہیں کیا بلکہ وہ بعض مغربی ممالک اور ناجائز صہیونی ریاست کے تعاون سے ایسے عناصر اور دہشتگردوں کی پشت پناہی کررہا ہے جو کیمیائی ھتھیاروں کو نہتے عوام کے خلاف استعمال کررہے ہیں.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@