میرجاوہ سرحدی واقعہ، ایرانی وفد جلد پاکستان جائے گا

زاہدان، 28 جون، ارنا - پاکستان سے ملحقہ ایران کے سرحدی علاقے 'میرجاوہ' میں گزشتہ دنوں دہشتگردی کے واقعے پر بات چیت کے لئے ایک ایرانی وفد جلد پاکستان کا دورہ کرے گا.

یہ بات پاکستانی سرحد سے ملحقہ ایران کے جنوب مشرقی صوبے سیستان و بلوچستان کے ڈپٹی گورنر جنرل برائے سیاسی اور سماجی امور 'محمد ہادی مرعشی' نے ارنا نیوز ایجنسی سے گفتگو کرتے ہوئے کہی.

انہوں ںے کہا کہ گزشتہ دنوں میرجاوہ میں دہشتگردوں نے ایرانی اہلکاروں کی چک پوسٹ پر حملہ کرکے تین کو شہید کردیا جبکہ اس واقعے میں آٹھ افراد بھی زخمی ہوئے.

انہوں نے مزید کہا کہ ایرانی فورسز نے حملہ آوروں کے خلاف فوری طور پر جوابی کاروائی کرکے ان پر کاری ضرب لگادی جس سے حملہ آور اپنی سازش میں ناکام رہے.

ایرانی عہدیدار نے کہا کہ ہماری اطلاعات کے مطابق حملہ آوروں کا سرحد پار منظم نیٹ ورک ہے اور ہم اس حوالے سے ضروری اقدامات اٹھارہے ہیں.

انہوں نے مزید کہا کہ اس واقعے کے بعد تہران میں پاکستانی سفیر کو دفترخارجہ بلایا گیا اور اس کے علاوہ میرجاوہ سرحدی واقعے پر ایک ایرانی وفد جلد پاکستان کا بھی دورہ کرے گا.

یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایرانی پاسداران انقلاب کی بری فورس نے 26 جون اعلان کیا تھا کہ ملک کے جنوبی مشرقی سرحدی علاقے ''میرجاوہ'' میں سیکورٹی اہلکاروں کے ساتھ جھڑپ میں تین دہشتگرد ہلاک ہوگئے.

پاسداران انقلاب بری فورس کے قدس کور کے مطابق، گزشتہ رات تکفیری گروہوں سے وابستہ دہشتگرد عناصر میرجاوہ کے تہلاب علاقے سے ملک کے اندر داخل ہونا چاہتے تھے تاہم سیکورٹی فورسز کی بر وقت کاروائی نے ان کی سازش کو بے نقاب کردیا.

دہشتگردوں اور سیکورٹی فورسز کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں تین حملہ آور ہلاک اور ان میں سے بعض زخمی ہوگئے جبکہ باقی دہشتگرد پاکستان کے حدود فرار ہوگئے.

اس آپریشن کے دوران اہل سنت کے دو رضاکار اور پاسداران انقلاب کا ایک اہلکاروں نے جام شہادت نوش کیا.

274**

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@